حماس نے اسرائیل کو غزہ پر حملے کا ’بہانہ‘ فراہم کیا: فلسطینی صدر محمود عباس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے صدر محمود عباس نے جمعرات کو کہا کہ حماس نے سات اکتوبر کو فلسطینی علاقے سے اسرائیل پر حملہ کر کے اسرائیل کو غزہ پر جنگ چھیڑنے کا بہانہ فراہم کیا۔

عباس نے بحرین میں عرب لیگ کے سربراہی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا، "اس دن سات اکتوبر کو حماس کے یکطرفہ فیصلے کی بنا پر ہونے والی فوجی کارروائی نے اسرائیل کو غزہ کی پٹی پر حملے کے لیے مزید بہانے اور جواز فراہم کیے۔"

بحرین کے دارالحکومت منامہ میں جمعرات کو عرب لیگ کا 33 واں سربراہی اجلاس شروع ہوا جہاں عرب رہنما اسرائیل-حماس جنگ کے زیرِ اثر جمع ہیں۔

سربراہی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عباس نے کہا کہ فلسطینی حکومت کو وہ مالی امداد نہیں ملی جس کی اسے بین الاقوامی اور علاقائی شراکت داروں سے توقع تھی۔

عباس نے کہا، "اب عرب حفاظتی نظام فعال کرنا، اپنے لوگوں کی لچک بڑھانا اور حکومت کو اپنے فرائض کی انجام دہی کے قابل بنانا اہم ہو گیا ہے۔"

فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیل کے وصول کردہ ٹیکس محصولات کی منتقلی ایک تنازعے کا شکار ہے جس کی وجہ سے مقبوضہ مغربی کنارے پر محدود حکمرانی کرنے والی فلسطینی اتھارٹی کی مالی اعانت پر شدید پابندیاں عائد ہو گئی ہیں۔

سابق فلسطینی وزیرِ اعظم محمد اشتیہ نے کہا ہے کہ بین الاقوامی عطیہ دہندگان نے فنڈز کم کر دیئے ہیں جو 6 بلین ڈالر کے سالانہ بجٹ کے 30 فیصد سے کم ہو کر تقریباً 1 فیصد رہ گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں