غزہ سے 17 امریکی ڈاکٹروں کا اسرائیل کے راستے انخلاء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ کے سرکاری ذرائع نے بتایا کہ جمعہ کے روز غزہ سے 17 امریکی ڈاکٹروں کو نکال لیا جو رفح گذرگاہ پر اسرائیلی قبضے کے بعد مصر کے ساتھ سرحد بند کر دینے سے پھنس گئے تھے۔

امریکی سفارت کاروں نے 17 ڈاکٹروں کے کرم ابو سالم گذرگاہ کے ذریعے اسرائیل جانے کا انتظام کیا۔

محکمۂ خارجہ کے ترجمان نے کہا، "غزہ میں پھنسے ہوئے کچھ امریکی ڈاکٹر اب بحفاظت روانہ ہو گئے ہیں جنہیں بیت المقدس میں امریکی سفارت خانے کی مدد سے روانہ کیا گیا۔"

انہوں نے کہا، "ہم ان گروپوں کے ساتھ قریبی رابطے میں رہے ہیں جن کا یہ امریکی ڈاکٹر حصہ ہیں اور ہم ان امریکی شہریوں کے اہلِ خانہ سے رابطے میں ہیں۔"

اس کارروائی سے واقف ایک ذریعے نے بتایا کہ تین دیگر امریکی ڈاکٹروں نے جو رضاکارانہ طبی مشن کا حصہ تھے، رکنے کا فیصلہ کیا حالانکہ اس حوالے سے صورتِ حال غیر یقینی ہے کہ انہیں دوبارہ جانے کا موقع کب ملے گا۔

رفح گذرگاہ مصر سے غزہ میں داخل ہونے والے سامان اور لوگوں کے لیے مرکزی راستہ رہی ہے۔ یہ اس وقت سے بند ہے جب اسرائیل نے سات مئی کو کہا تھا کہ اس نے سرحدی چوکی حماس سے چھینی تھی۔

اسرائیلی وزیرِ اعظم بینجمن نیتن یاہو نے کراسنگ کو دوبارہ کھولنے کی ذمہ داری مصر پر عائد کی ہے۔

مصر نے جواب میں اسرائیل پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ غزہ میں انسانی بحران کی ذمہ داری سے انکار کر رہا ہے اور کہا ہے کہ ٹرک ڈرائیور اور امدادی کارکن غزہ میں داخلے کے لیے اسرائیلی چوکی سے گذرتے ہوئے محفوظ محسوس نہیں کرتے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں