لبنان پر اسرائیلی حملوں میں 4 افراد ہلاک: حزب اللہ کے قریبی ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حزب اللہ کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ پیر کو جنوبی لبنان میں چار مزاحمت کار ہلاک ہو گئے۔ گروپ نے دو ہلاکتوں اور جوابی حملے کا اعلان کیا جبکہ اسرائیل نے حملوں کا دعویٰ کیا۔

حزب اللہ کے قریبی ذرائع نے اے ایف پی کو بتایا کہ "جنوبی لبنان میں دو مختلف مقامات پر اسرائیلی حملوں میں حزب اللہ کے کم از کم چار مزاحمت کار مارے گئے" اور ان مقامات کی شناخت ساحل پر واقع ناقورہ اور مشرق میں ایک سرحدی گاؤں میس الجبل کے نام سے ہوئی ہے۔

شیعہ مسلم تحریک نے مزید تفصیلات بتائے بغیر کہا کہ اس کے دو مزاحمت کار مارے گئے اور دونوں ناقورہ سے تھے۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ جنگی طیاروں نے "حزب اللہ کے دہشت گرد سیل" اور میس الجبل کے علاقے میں حملوں کے ایک مقام کو نشانہ بنایا جبکہ ناقورہ کے علاقے میں اسرائیلی فوج نے "خطرہ دور کرنے کے لیے توپ خانے سے فائر کیا"۔

حزب اللہ نے کہا کہ اس نے ناقورہ حملے کے "جواب کے طور پر" ملک کے شمال میں اسرائیلی فوج کی بیرکوں پر ایک بھاری راکٹ حملہ کیا ہے جبکہ اسرائیلی پوزیشنوں پر دیگر حملوں کا بھی اعلان کیا۔

لبنان کی سرکاری نیشنل نیوز ایجنسی (این این اے) نے میس الجبل اور ناقورہ پر اسرائیلی حملوں کی اطلاع دی جہاں اس نے کہا کہ اسرائیل نے حزب اللہ سے وابستہ ریسکیو اہلکاروں کے قریب فائرنگ کی اور ایک شہری زخمی ہو گیا۔

اے ایف پی کے اعداد و شمار کے مطابق لڑائی میں لبنان میں کم از کم 423 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر مزاحمت کار ہیں لیکن ان میں 82 عام شہری بھی شامل ہیں۔

اسرائیل نے کہا ہے کہ اس کی سرحد پر 14 فوجی اور 11 شہری مارے گئے ہیں۔

تشدد سے حزب اللہ اور اسرائیل کے درمیان بھرپور تصادم کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے جو 2006 میں جنگ لڑ چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں