"غزہ کے ہسپتالوں اور طبی عملے کا محاصرہ ختم اورطبی امدادغزہ پہنچانے کی اجازت دی جائے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ٹیڈروس اذانوم گیبرئیس نے کہا ہے ' غزہ میں اسرائیل کی جانب سے امدادی سامان اور خصوصاً طبی اشیاء کی ترسیل پر عائد کردہ پابندیوں کو ختم کر کے رفح راہداری کے راستے ادویات اور طبی آلات کی غزہ تک رسائی ممکن بنائی جائے۔ انہوں نے یہ مطالبہ منگل کے روز کیا ہے۔

وہ جنیوا میں ایسے موقع پر ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے جب شمالی غزہ میں اسرائیل فوج نے ایک ہسپتال کو نشانے پر لیتے ہوئے اس پر میزائلوں سے حملے کیے ہیں اور اس کی ایمر جنسی کو نقصان پہنچایا ہے۔

انہوں نے کہا ' ایک طرف غزہ کے لوگوں کو غذائی اشیا اور خوراک کی قلت کا سامنا ہے اور دوسری جانب طبی ضروریات بھی دستیاب نہیں کہ ان کی ترسیل میں اسرائیلی ناکہ بندی حائل ہے۔ '

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ نے اسرائیل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ناکہ بندی ختم کرے اور غزہ میں امدادی بشمول طبی سان کی منتقلی ممکن ہونے دے۔ کیونکہ غزہ میں امداد اور طبی امداد کے اس بہاؤ کے ساتھ وہاں کی آبادی کی زندگی بچانا مشکل نہیں عملاً غیر ممکن بنایا دیا گیا ہے۔

دوسری جانب اسرائیل یہ مسلسل کہہ رہا ہے کہ غزہ میں کو کچھ بھی غیر قانونی نہیں کر رہا ہے۔ اصل بات یہ ہے کہ غزہ کے لیے امداد آ ہی نہیں رہی ہے۔ امریکی صدر جوبائیڈن نے بھی یہی کہا ہے کہ غزہ میں ایسا کچھ نہیں کیا جا رہا جسے جنگی جرم کہا جا سکتا ہو۔ '

تاہم عالمی ادارہ صحت کے سربراہ کی اطلاعات اور تجربہ اسرائیل اور امریکہ دونوں سے مختلف ہے۔ ان کے بقول ' اسرائیلی اقدامات سے چھ ہسپتال اور نو بنیادی صحت مراکز متاثر ہو ئے ہیں جبکہ 70 پناہ گاہوں میں طبی خدمات متاثر ہو چکی ہیں۔ نہ صرف یہ روزانہ کی بنیاد پر حفاظتی ٹیکوں کے لگانے میں چالیس سے پچاس فیصد کمی آگئی ہے۔'

عالمی ادرہ صحت کے سربراہ نے کہا 'غزہ میں ایسے کم از کم 700 مریض ہیں جن کی حالت نازک یا خراب ہے اور انہیں کسی دوسری جگہ مناسب طبی سہولت کے لیے لے جانا ضروری ہے مگر نہیں کر سکتے کہ ہر طرف سے راستے ناکہ بندی کی زد میں ہیں اور راہداریاں اب بند ہو چکی ہیں۔ '

ڈی جی عالمی ادارہ صحت نے کہا ' غزہ کا العودہ ہسپتال اتوار کے روز سے مسلسل فوجی گھیرے میں ہے۔ ہسپتال کا عملہ اور مریض و زخمی ہسپتال کے اندر پھنسے ہوئے ہیں۔ انہیں باہر سے کوئی امداد جا سکتی ہے۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں