نیتن یاہو کے خلاف فوجداری عدالت کے اقدامات ہنگری قبول نہیں کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم کو جنگی جرائم کے ارتکاب کے سلسلے میں بین الاقوامی فوجداری عدالت کے ممکنہ وارنٹ گرفتاری کے خلاف یورپی ملک ہنگری نے بھی آواز اٹھادی ہے اور کہا ہے کہ نیتن یاہو کی گرفتاری ہنگری کے لیے قابل قبول نہیں ہوگی۔

ہنگری کے وزیر اعظم وکٹر اوربان کے چیف آف سٹاف نے جمعرات کے روز بین الاقوامی فوجداری عدالت کے پراسیکیوٹر کے اسرائیلی وزیر اعظم کے خلاف وارنٹ گرفتاری کی درخواست کے بار ے میں کہا ہم اسے برداشت نہیں کر سکتے ہیں۔ ہم نیتن یاہو کے خلاف بین الاقوامی فوجداری عدالت کا ہنگری میں کوئی اقدام قبول نہیں کریں گے۔

وزیراعظم کے چیف آف سٹاف نے ایک نیوز کانفرنس کے دورآن کہا اگرچہ ہنگری نے بین الاقوامی فوجداری عدالت کے قانون کی توثیق کر رکھی ہے۔ لیکن ہم نے اسے کبھی بھی ہنگری کے قانون کا حصہ نہیں بنایا ہے۔

انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا بین الاقوامی فوجداری عدالت کا ہنگری کے اندر کوئی اقدام ممکن نہیں ہو سکتا۔ نیز نیتن یاہو کے خلاف بالکل نہیں۔

واضح رہے 'آئی سی سی' کے پراسیکیوٹر کریم خان نے پیر کے روز کہا تھا کہ انہوں نے مبینہ جنگی جرائم کے الزام میں اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو اور ان کے وزیر دفاع یوو گیلنٹ کے ساتھ ساتھ حماس کے تین رہنماؤں کے وارنٹ گرفتاری کی درخواست کی ہے۔ جمعرات کے روز یورپی ملک ہنگری نے فوجداری عدالت کا حکم نہ ماننے کا اعلان کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں