اسرائیلی فوجی اہلکار نے فوج کے خلاف علم بغاوت بلند کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی پرآٹھ ماہ سے جاری اسرائیلی جنگ کے دوران اسرائیلی حکومت کو اندرون اور بیرون ملک سےدبائو کا سامنا ہے۔ اس دوران تازہ پیش رفت اسرائیلی فوج کے اندر سے آئی ہے جہاں ایک اسرائیلی فوجی کی آرمی چیف کے احکامات کے خلاف اعلان بغاوت کی ویڈیو پرایک نیا تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔

ریزرو فوج کے ایک اہلکار کو ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے جو گذشتہ چند گھنٹوں میں وائرل ہوئی ہے۔ اس میں اس نےنیتن یاہو سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ غزہ کے محاذ جنگ میں آگے بڑھیں اور حماس کے جنگجوئوں کے خلاف فتح کے حصول تک لڑیں۔

دریں اثناء مذکورہ فوجی نے وزیر دفاع یوآو گیلنٹ اور آرمی چیف آف سٹاف ہرزی ہیلیوی کے خلاف بغاوت کا اعلان کرتے ہوئے ان سے مطالبہ کیا کہ اگر وہ غزہ کی پٹی سے اسرائیلی افواج کو نکالنے کا فیصلہ کرتے ہیں تو مستعفی ہو جائیں۔

اس نے اس بات پر بھی زور دیا کہ ایک لاکھ ریزرو فوجی آخری دم تک لڑنے کے لیے تیار ہیں۔اس نے غزہ کی پٹی کو حماس، فلسطینی اتھارٹی یا حتیٰ کہ کسی دوسری عرب قیادت کے حوالے کرنے کی سخت مخالفت کی۔

اس نے ایک بار پھر نیتن یاہو کی مکمل حمایت کاعزم کرتے ہوئے کہا کہ فوج کو حماس کے مکمل خاتمے تک جنگ جاری رکھنی چاہیے۔

7 اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں اسرائیلی بستیوں اور فوجی اڈوں پر حماس کی جانب سے کیے گئے اچانک حملے کے بعد گذشتہ آٹھ ماہ سے جاری جنگ میں نیتن یاہو کو اندرون اور بیرون ملک شدید تنقید کا سامنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں