10 سال بعد شام سے پہلی حج پرواز براہ راست سعودی عرب پہنچ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک دہائی کے بعد شام کا طیارہ پہلی بار براہ راست پرواز کر کے دمشق سے 270 عازمین حج کو لے کر سعودی عرب پہنچا ہے۔ یہ پیش رفت منگل کی صبح سامنے آئی ہے۔

شام میں 2012 سے شروع ہونے والی خوفناک خانہ جنگی کے بعد عرب لیگ نے بشارالاسد حکومت کی وجہ سے شام کے ساتھ تعلقات ختم کر دیے تھے۔ بعد ازاں شام کو عرب لیگ کی رکنیت سے بھی محروم کر دیا گیا۔ تاہم حالیہ برسوں میں شام کے ساتھ عرب دنیا نے سعودی عرب کی پیروی میں سفارتی تعلقات بھی بحال کر لیے ہیں ۔

تعلقات میں بہتری کا یہ سلسلہ ریاض کے دمشق کے ساتھ تعلقات میں بہتری کے ساتھ آیا ۔ سعودی عرب نے بھی تقریباایک دہائی بعد سفیر شام بھیجا۔ جبکہ 22 رکنی عرب لیگ نے 2023 میں شام کی رکنیت بھی بحال کر دی۔

اس پیش رفت کے ثمر کے طور پر منگل کی صبح شامی طیارہ عازمین حج کو لے کر سعودی عرب پہنچا ہے۔ شام کو دیر سے دوسری حج پرواز بھی دمشق سے براہ راست سعودی عرب پہنچے گی۔

حج اسلام کے ارکان میں سے ایک ہے۔ اس کی ادائیگی زندگی میں ایک بار صاحب استطاعت لوگوں پر فرض ہے۔ مناسک حج کی ادائیگی حجاز مقدس میں ادا کیے جاتے ہیں۔

اس سال امکان ہے کہ فریضہ حج کی ادائیگی کا آغاز 14 جون کو ہوگا۔ پچھلے سال لگ بھگ اٹھارہ لاکھ عازمین حج نے یہ فریضہ ادا کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں