بیرون ملک سے آنے والے 20 ہزارافراد نے حج ہدایات کی خلاف ورزی کی: پبلک سکیورٹی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی پبلک سکیورٹی نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ تمام اقسام اور ناموں کے وزٹ ویزے اور ان کے حاملین کو حج کرنے کی اجازت نہیں۔ مملکت کےان تمام مہمانوں کو جو وزٹ ویزا رکھتے ہیں وہ مکہ مکرمہ کے مقدس شہر میں نہ جائیں یا پندرہ ذی القعدہ سے پندرہ ذی الحج تک وہاں نہ رہیں۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ 20،000 سے زیادہ تارکین وطن جن کے پاس کسی بھی قسم کا وزٹ ویزہ ہے وہ حج کے عرصے میں مکہ مکرمہ میں نہ رہیں۔

پبلک سکیورٹی نے زور دیا کہ جو بھی حج انتظامات اور ضوابط کی خلاف ورزی کرے گا اس کے خلاف مملکت کےقانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔ حج کے ایام میں صرف حجاج کرام کو حرم مکی میں داخلے کی اجازت ہوگی اور حجاج کرام کی سلامتی اور مناسک کی ادائی میں سہولت کےلیے غیر مجاز لوگوں کو وہاں جانے کی اجازت نہیں۔

دوسری جانب سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے اس سال 1445ھ میں حج ویزا کے ساتھ مملکت آنے والوں کے لیے ڈیجیٹل شناخت سروس کا آغاز کیا، جو کہ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کےوژن 2030 کے ڈیجیٹیل تبدیلی کے پروگرام کا حصہ ہے۔

اس کے علاوہ پبلک سکیورٹی نےکہا کہ کوئی بھی ویزہ ہولڈر جو انٹری ویزا کی میعاد ختم ہونے کے لیے مخصوص وقت پر روانگی کی اطلاع دینے میں تاخیر کرے گا اسے 50,000 ریال تک جرمانہ اور چھ ماہ تک قید کی سزا ہوگی۔

پبلک سکیورٹی نے مکہ مکرمہ، ریاض، اور الشرقیہ کے علاقوں میں میں حج ضوابط کی خلاف ورزی یا اس سے متعلق کسی قسم کی شکایت ہیلپ لائن نمبر 911 اور مملکت کے باقی علاقوں میں 999 پر مجاز حکام کو دی جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں