سعودی عرب: سات سرکاری اداروں میں بدعنوانی کے مقدمات شروع، 112 ملزم گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کی نگران اور انسداد بدعنوانی اتھارٹی "نزاہہ" نے مئی 2024 میں متعدد فوجداری اور انتظامی مقدمات شروع کیے ہیں۔ اس کے نتیجے میں 3,806 اوورسائٹ راؤنڈز پر عمل درآمد ہوا اور 446 ملزمان سے تفتیش کی گئی۔ ان ملزموں میں سے کچھ ملزم وزارت داخلہ، وزارت نیشنل گارڈ، وزارت انصاف، وزارت صحت، وزارت بلدیات و دیہی امور، ہاؤسنگ، انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے ساتھ ساتھ وزارت زکوٰۃ، ٹیکس و کسٹمز اتھارٹی میں کام کرتے ہیں۔

ان میں سے 112 کو گرفتار کیا گیا تھا ۔ گرفتار کیے گئے افراد میں سے کچھ کو رشوت خوری، اختیارات کے غلط استعمال، جعلسازی اور منی لانڈرنگ جیسے بدعنوانی کے جرائم کے نتیجے میں ’’ضمانت‘‘ پر رہا کیا گیا تھا۔ نگرانی اور انسداد بدعنوانی اتھارٹی "نزاہہ" مملکت سعودی عرب کے لیے بدعنوانی سے نمٹنے کے لیے ایک کامیاب اور اہم ماڈل بن رہی ہے۔ اتھارٹی نے بدعنوانی اور متعلقہ منی لانڈرنگ کے جرائم سے نمٹنے کے لیے مقامی اور بین الاقوامی کوششوں کو تیز کرنے کا ارادہ بھی رکھتی ہے۔

’’نزاہہ‘‘ اس بات کی تصدیق کرتی ہے کہ وہ کسی بھی ایسے شخص کی نگرانی اور کنٹرول جاری رکھے ہوئے ہے جو عوامی فنڈز پر قبضہ کرتا یا ان فنڈز کو اپنے ذاتی فائدے کے حصول یا عوامی مفاد کو نقصان پہنچانے کے لیے استعمال کرتا اور اپنے عہدے کا غلط استعمال کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں