کربلا کے بعد سعودی سفیر کا نجف اور اس کے اہم مقامات کا دورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی سفیر نے عراق میں کربلا گورنری کا دورہ کرنے کے بعد نجف اور یہاں موجود اہم مقامات کا دورہ بھی کیا ہے۔ انہوں نے نجف میں حضرت علی رضی اللہ عنہ کے مزار کا بھی دورہ کیا۔ عراق میں سعودی سفیر عبدالعزیز الشمری نے 13 مئی کو کربلا کا دورہ کیا اور حضرت حسین علیہ السلام کے مزار پر بھی حاضری دی تھی۔

کربلا میں انہوں نے متعدد اہم شخصیات اور قابل ذکر افراد سے ملاقاتیں کیں۔ یہ شہر میں سعودی سفیر کے لیے اپنی نوعیت کا پہلا دورہ تھا۔ شہر میں مذہبی عبادت گاہیں اور مدارس میں موجود ہیں اور عراق کے اندر اور باہر سے کثیر تعداد میں لوگ اس شہر کا رخ کرتے ہیں۔

سعودی سفیر عبد العزیز الشمری سعودی عرب اور عراق کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے کے لیے سرگرم ہیں۔ ایک سفارتی نقطہ نظر کے مطابق ہمسایہ ممالک میں تعلقات کی بہتری اہم ہے۔ ریاض بھی مستقبل میں بغداد کے ساتھ اقتصادی، سلامتی، ثقافتی اور سیاسی شراکت داری قائم کرنا چاہتا ہے کیونکہ دونوں ممالک کے درمیان اچھے تعلقات ہیں۔ دونوں ملکوں کو خلیج عرب کی سلامتی کا سنگ بنیاد سمجھا جاتا ہے۔ دونوں ملک مشرق وسطیٰ میں ہونے والی کشیدگی اور جنگوں کے درمیان خطے کے لیے ایک حفاظتی جال بنتے ہیں۔

اسی تناظر میں سعودی سفیر نے نے نجف گورنری کا دورہ بھی کیا۔ یہ دورہ اس وقت ہوا جب وہ پہلے کربلا گورنریٹ کا دورہ کر چکے تھے۔ 13 مئی کو "العربیہ ڈاٹ نیٹ" ویب سائٹ نے سعودی سفیرکے کربلا کے دورے کے حوالے سے ایک رپورٹ شائع کی جس میں نجف کے حالیہ دورے کا حوالہ بھی دیا گیا تھا۔

یکم جون کو سعودی سفیر الشمری نے نجف ایئرپورٹ پر منعقدہ ایک خصوصی تقریب میں مشرقی سعودی عرب سے آنے والے زائرین کا استقبال کیا۔ بہت سے لوگوں کا خیال ہے یکم جون کو نجف گورنری میں سفیر عبدالعزیز الشمری کا پہلا دن نہیں تھا۔ بلکہ الشمری 31 مئی کو ایک فوری اور خصوصی دورے کے لیے شہر پہنچے تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو باخبر ذرائع سے حاصل ہونے والی مصدقہ معلومات میں بتایا گیا کہ عراق میں سعودی سفیر عبدالعزیز الشمری نجف شہر گئے۔ اس شہر میں "الحوزہ العلمیہ" قائم ہے۔ الشمری نے شہر میں اعلیٰ مذہبی حکام جن میں شیخ اسحاق فیاض، شیخ بشیر نجفی اور دیگر علما شامل تھے سے خصوصی سکیورٹی اہلکاروں کی موجودگی میں ملاقات کی۔

شیخ اسحاق فیاض اور شیخ بشیر نجفی کو عراق کے اندر اور اسلامی دنیا میں انتہائی قابل احترام مذہبی شخصیات سمجھا جاتا ہے۔ ان کے لاکھوں پیروکار ہیں۔ سعودی سفیر کا نجف کا یہ دورہ مملکت سعودی عرب کی کھلے پن اور مختلف اعتدال پسند مذہبیوں کے احترام کا واضح پیغام ہے۔

ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ دورے کا ماحول "مثبت" تھا۔ سعودی سفیر الشمری کے اقدامات کو نجف میں مذہبی اتھارٹی کی طرف سے قابل احترام قرار دیا جارہا اور اس کی تعریف کی جارہی ہے۔ مدرسے کے سینئر اساتذہ میں اس کے اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

یہ اقدامات سعودی عرب کے جذبے کو ایک منزل کے طور پر ظاہر کرتے ہیں اور قیادت کی جانب سے جنونیت اور فرقہ واریت کو مسترد کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہیں۔ یہ قدم عراق اور سعودی عرب کے درمیان عوامی تعلقات کو مضبوط بنانے میں معاون ثابت ہوگا۔ اسی طرح شدت پسند اور دہشت گرد گروہوں کی طرف سے پھیلائی گئی منفی چیزوں پر قابو پانے کی طرف بھی لے جائے گا۔

نجف کے دورے میں سعودی سفیر نے امام علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہ کا مزار کا دورہ بھی کیا جہاں تقریبات میں سعودی سفیر کا استقبال کیا گیا۔ یہاں سعودی سفیر نے متعدد عہدیداروں سے ملاقات کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں