لبنانی سرحد پر اسرائیلی فوج جارحیت کے فیصلے کے قریب ہے: اسرائیلی فوجی سربراہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج کے چیف آف سٹاف نے منگل کے روز کہا ہے کہ ان کے زیر کمان فوج شمالی سرحد پر لبنان کی طرف جارحیت کے لیے تیار ہے۔ دوسری جانب حزب اللہ نے اعلان کیا ہے کہ وہ جھگڑے کو پھیلانا نہیں چاہتا مگر اپنے اوپر مسلط کی گئی جنگ ضرور لڑے گا۔

واضح رہے اسرائیل اور غزہ کے درمیان لبنانی سرحد کے آر پار غزہ کے متوازی ایک جنگ جاری ہے تاہم اس جنگ کا تعلق سرحدی جھڑپوں تک محدود ہے جو پچھلے تقریباً آٹھ ماہ پر پھیلی ہوئی ہیں۔ ان جھڑپوں کے دوران ہمیشہ یہ خدشہ رہتا ہے کہ یہ کشیدگی کے پھیلاؤ کا سبب بن سکتی ہیں۔

اب جبکہ امریکی صدر جوبائیڈن اپنی انتخابی مہم کے دوران اسرائیل کی غزہ میں رکوانے کے لیے ایک روڈ میپ پیش کر رہے ہیں، اسرائیلی چیف آف جنرل سٹاف جنرل ہرزی حلوی نے لبنان کی سرحد کی طرف باقاعدہ اور جامع جارحیت کے قریب پہنچنے کی اطلاع دی ہے۔ اسرائیلی فوجی سربراہ کے مطابق لبنان کے حوالے سے بھی ہم فیصلے کے قریب ہیں۔ لبنان کے ساتھ اسرائیل اس سے قبل بھی کئی بار جنگ کر چکا ہے۔

اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان 2006 کی جنگ کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ کشدگی میں اس قدر شدت اور تواتر ہے۔ اس وجہ سے دونوں طرف سے ہزاروں لوگوں نے سرحدی علاقوں سے نقل مکانی بھی کی ہے۔

ادھر امریکی دفتر خارجہ کے ترجمان میتیھیو ملر نے کہا ہے کہ امریکہ اسرائیل کی حزب اللہ کے ساتھ مکمل جنگ کی حمایت نہیں کرتا ہے۔ لیکن اسرائیل کو اپنا دفاع کرنے کا حق ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں