حزب اللہ کا ڈرون حملہ، سات اسرائیلی زخمی، ایک کی حالت تشویشناک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حزب اللہ نے اسرائیل کے سرحدی علاقے میں اپنے اہداف کو ڈرون حملے سے نشانہ بنایا ہے۔ یہ تازہ ڈرون حملہ بدھ کے روز کیا گیا ہے۔ جس میں کم از کم سات لوگ زخمی ہوئے ہیں۔ ایک کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ ایران کی حمایت یافتہ لبنانی حزب اللہ نے یہ ڈرون حملہ حرفیش نامی گاؤں میں کیا ہے۔ یہ گاؤں عرب آبادی کا گاؤں ہے اور لبنانی سرحد سے محض تین کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔

حزب اللہ کی طرف سے یہ ڈرون حملہ ایسے وقت میں کیا گیا جب وزیر اعظم اسرائیل نیتن یاہو نے دھمکی دی ہے کہ حزب اللہ کے ساتھ لمبے عرصے سے جاری جھڑپیں جلد بڑھا دی جائیں گی۔ اسرائیلی فوج کے سربراہ جنرل ہرزی حلوی نے بھی کہا تھا کہ ہم حزب اللہ کے بارے میں فیصلے کے قریب پہنچ چکے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق حرفیش میں فٹ بال کے میدان پر حملہ ہوا۔ کچھ لوگ ہلاک ہوئے ہیں لیکن ان کی شناخت کا ہمیں پتا نہیں۔ جبکہ سی سی ٹی وی کیمرے کی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ فوج کی گاڑیاں موجود ہیں اور فٹ بال کے میدان سے دھواں اٹھ رہا ہے۔

اس حملے کی ذمہ داری حزب اللہ نے قبول کی ہے۔ اسرائیلی فوج کے مطابق اس سے پہلے بھی کئی حملے کیے جا چکے ہیں۔ تاہم اس بار فوج اور دیگر متعلقہ ادارے پہلے سے اندازہ نہیں کر سکی اور لوگوں کو پناہ گاہوں کی طرف جانے کا نہیں کہہ سکی۔

واضح رہے اسرائیل کا انٹیلی جنس کا نظام بار بار ناکام ہو رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں