سعودی عرب: سیمی کنڈکٹر کمپنیوں میں سرمایہ کاری کے لیے ارب ریال کا فنڈ قائم

مقصد سعودی عرب میں 6 سالوں میں ملک کے اندر 50 کمپنیاں بنانا ہے، کمپنیوں کو 10 مراعات دی جا رہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے سیمی کنڈکٹر کمپنیوں میں سرمایہ کاری کرنے کے لیے ایک ارب ریال کا ایک فنڈ قائم کردیا جس کا مقصد چھوٹے اور درمیانے درجے کے سٹارٹ اپس کو اس صنعت کو اپنانے کی ترغیب دینا ہے۔ فنڈ کے قیام کا اعلان بدھ کو ریاض میں شروع ہونے والے سیمی کنڈکٹر فیوچر فورم کی سرگرمیوں کے دوران کیا گیا۔

نئے فنڈ کا مقصد سعودی عرب میں کام کرنے والی سیمی کنڈکٹر سیکٹر کی کمپنیوں کی تعداد 5 سے 6 سال کے اندر 50 کمپنیوں تک پہنچانا ہے۔ سعودی عرب خصوصی مراعات کی پیشکش اور ضروری فنانسنگ فراہم کرکے بین الاقوامی چپ کمپنیوں کو کام کرنے کی طرف راغب کرنے کا خواہاں ہے۔

نیشنل سیمی کنڈکٹر سینٹر فنڈ کی نگرانی کرے گا۔ اس حوالے سے 3 کمپنیاں پہلے ہی رجسٹرڈ ہو چکی ہیں اور 10 دیگر کمپنیوں نے اس میں شامل ہونے کی درخواست کی ہے۔ سعودی عرب کمپنیوں کو 10 مراعات دے رہا ہے جس میں سیمی کنڈکٹر فنڈ اور انجینئرز تک رسائی شامل ہے۔ یہ وہ انجینئرز ہیں جنہیں سعودی عرب تربیت دینے اور اپنے ہاں منتقل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

واضح رہے سعودی عرب میں سیمی کنڈکٹر فیوچر فورم سیمی کنڈکٹر ٹیکنالوجیز کے میدان میں متعدد فیصلہ سازوں، صنعت کے رہنماؤں، ماہرین اور محققین کو ایک جگہ پر جمع کرتا ہے۔ ان افراد میں پروفیسر شوجی ناکامورا بھی شامل ہیں جنہوں نے 2014 میں فزکس میں نوبل انعام جیتا تھا۔ انہوں نے نے نیلے یا سبز ایل ای ڈیز اور الٹرا وائلٹ لیزر ڈائیوڈز کی ایجاد کرنے پر یہ انعام پایا تھا۔ اس کے علاوہ فورم میں دنیا بھر کی متعدد شخصیات شریک ہوکر اپنے تجربات کا تبادلہ کرتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں