پانچ ہزار ڈاکٹر 183 مراکز میں عازمین حج کی صحت کی دیکھ بھال کر رہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی عرب میں صحت کے نظام نے 1445 ہجری کے حج سیزن کے دوران ضیوف الرحمن کو خدمات کی راہمتی کے لیے انسانی کیڈرز اور صحت کی سہولیات کی مکمل تیاری کا اعلان کیا ہے۔ اس حوالے سے مربوط تیاریوں اور نئی ٹیکنالوجیز کو اپنایا گیا۔ مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں تمام ہسپتال، مراکز صحت اور موبائل کلینکس کو حجاج کرام کی خدمت پر مامور کردیا گیا ہے۔

میڈیکل سہولیات

سعودی وزارت صحت نے بتایا ہے کہ 32 ہزار سے زیادہ طبی اور انتظامی عملے کو مختلف صحت کی سہولیات اور مراکز میں تقسیم کیا گیا ہے۔ مختلف خصوصیات کے 5,000 سے زیادہ ڈاکٹر ضروری صحت کی دیکھ بھال فراہم کریں گے اور 183 صحت کی سہولیات میں چوبیس گھنٹے کسی بھی ہنگامی صورتحال کا فوری جواب دینے کے لیے موجود ہوں گے۔ 32 ہسپتال، 151 صحت کے مراکز اور 6 موبائل کلینکس میں جدید ترین طبی ٹیکنالوجی سے لیس فوری اور موثر صحت کی دیکھ بھال کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے 64 ہزار سے زیادہ بیڈز کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔

جدید ترین میڈیکل ٹیکنالوجیز

وزارت صحت نے بتایا ہے کہ حجاج کی خدمت کی تیاری صرف انسانی اور مادی آلات تک ہی محدود نہیں تھی بلکہ اس میں جدید ترین ہیلتھ ٹیکنالوجیز اور خودکار خدمات کا استعمال بھی شامل ہے۔ ان سہولیات میں ’’ صحہ‘‘ ورچوئل ہسپتال اور اس سے منسلک ورچوئل کلینک جو ریموٹ فراہم کرتا ہے بھی شامل ہے۔ فراہم کی گئی ایپلیکشن ’’ صحتی‘‘ کا استعمال حجاج کے صحت کے ڈیٹا کو منظم کرنے اور کوششوں کو مربوط کرنے کے لیے مربوط الیکٹرانک سسٹمز اور پلیٹ فارم مہیا کرتی ہے۔ مقدس مقامات کے ہسپتالوں کے درمیان خون کے یونٹس اور لیبارٹری کے نمونوں کو تیزی سے منتقل کرنے کے لیے متعلقہ حکام کے ساتھ رابطہ کاری بھی کی جا رہی ہے۔

صحت کی ضروریات کا نفاذ

عازمین حج کی دیکھ بھال کے قومی نظام کے ساتھ انضمام کو بڑھانے کے لیے وزارت صحت نے ’’روڈ ٹو مکہ‘‘ اقدام میں بھی اپنا حصہ شامل کیا ہے۔ اس اقدام کا مقصد حجاج کے داخلے کے طریقہ کار کو آسان بنانا، صحت کی ضروریات کو نافذ کرنا اور ان کی روانگی سے قبل احتیاطی تدابیر اختیار کرنا ہے۔

مملکت سعودی عرب کے ساتھ اور شریک ممالک کے ساتھ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ حجاج کرام اپنی آمد سے پہلے صحت کے تقاضوں پر عمل کریں، یہ اقدام انہیں بندرگاہوں پر تصدیقی طریقہ کار کی ضرورت کے بغیر براہ راست اپنی رہائش گاہوں پر جانے کی اجازت دیتا ہے۔

ایمبولینس خدمات

سعودی ہلال احمر اتھارٹی نے حج سیزن 1445 کے لیے ضیوف الرحمان کی آمد اور ان کی خدمت کے لیے اپنی تیاریاں مکمل کر لی ہیں۔ اس نے اپنی تمام افرادی قوت اور زمینی اور فضائی ایمبولینس خدمات کے بیڑے کو متحرک کردیا ہے۔ آفات میں تیز رفتار ردعمل کے لیے ایمبولینس، ایئر ایمبولینس طیاروں کے ساتھ ساتھ موٹر سائیکلوں اور گولف کارٹس کو بھی مہیا کیا گیا ہے۔

اتھارٹی دو ہزار 540 سے زیادہ ایمبولینس فراہم کر رہی ہے۔ انتظامی طبی عملہ بھی مہیا کیا گیا ہے۔ یہ ایمبولینسز بندرگاہوں، حج کے راستوں، مقدس دارالحکومت، مکہ مکرمہ کی مسجد حرام اور مقدس مقامات کے 98 ہنگامی مراکز میں تقسیم کی گئی ہیں۔ سات ایئر ایمبولینس طیاروں کے ساتھ 694 سے زیادہ فیلڈ ورکرز موجود ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں