مشرق وسطیٰ

غزہ سے اسرائیلی فوج نے چار یرغمالیوں کو رہا کرا لیا، 115 فلسطینی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے ہفتے کے روز یہ اعلان کیا ہے کہ چار یرغمالیوں کو غزہ سے زندہ رہا کرا لیا گیا ہے۔ یرغمالیوں کی رہائی مشکل اور پیچیدہ کارروائی کے بعد ممکن ہوئی جو کہ ہفتے کے روز دن کے وقت کیا گیا۔

کارروائی کے نتیجے میں رہا ہونے والے یرغمالیوں میں نووا ارغمانی، الموگ میر جان، آندرے کوزلوو اور شلوہمی زیو شامل ہیں جنہیں حماس نے سات اکتوبر کو نووا میوزک فیسٹیول سے اغوا کیا تھا۔ اسرائیلی فوج نے اپنے بیان میں کہا کہ چاروں یرغمالی طبی لحاظ سے اچھی حالت میں ہیں۔

رہائی کے حوالے سے اسرائیل فوج کا مزید کہنا تھا کہ ان یرغمالیوں کو دو مختلف جگہوں سے رہا کرایا گیا وسطی غزہ کے قصبے نصیرات کے مرکزی حصے سے رہا کرایا گیا ہے۔

اس سے پہلے صبح کے وقت دیے گئے بیان میں اسرائیلی فوج کا کہنا تھا کہ نصیرات میں اسرائیلی فوج عسکریت پسندوں کے انفراسٹرکچر کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

غزہ ایک ہسپتال نے بتایا ہے کہ اسرائیلی فوج نے نصیرات کے مرکز اور نصیرات کیمپ میں کم از کم 15 فلسطینیوں کو شہید کر دیا ہے۔ اقصی شہدا ہسپتال کے ترجمان خلیل الدر کان کے مطابق ان پندرہ شہدا کے علاوہ بد ترین بمباری کر کے دسیوں کو زخمی کر دیا ہے۔

ترجمان نے 'اے ایف پی' کو بتایا ہفتے کے روز لاشیں نصیرات کیمپ ، دیر البلاح اور آس پاس کے علاقوں سے آئی ہیں ۔جبکہ ابھی درجنوں لاشیں اور بمابری میں زخمی ہونے والے گلیوں میں پڑے ہیں۔ جبکہ اسرائیلی فوج نصیرات کیمپ کے علاقے میں وحشیانہ کارروائی کر رہی ہے۔

سوشل میڈیا پر اسرائیلی ٹی وی چینلز کی دکھائی گئی فوٹیج دکھائی جارہی ہے۔ جس میں گہرے دھویں کے بادل اور شعلے نظر اتے ہیں۔ دوسری جانب رفح کے بارے میں غزہ کی وزارت صحت نے اطلاع دی یے کہ لگ بھگ ایک سو فلسطینیوں کو اسرائیلی فوج نے تازہ حملوں میں قتل کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں