کئی سال سکیورٹی گارڈ کے پیشے سے وابستہ یحییٰ القحطانی حیاتیات کے استاد کیسے بنے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

طویل انتظار اوربائیولوجی کے مضمون میں گریجوایشن کرنے کے بعد سعودی عرب کے یحییٰ القحطانی نے سکیورٹی گارڈ کے طور پر اپنا پیشہ ترک کرکے استاد بھرتی ہو کر اپنا دیرینہ خواب پورا کرلیا۔

سعودی عرب کے جنوبی شہر نجران سےتعلق رکھنے والے یحییٰ القحطانی اب سکیورٹی گارڈ نہیں بلکہ انہیں بائیولوجی کے استاد کے طور پر تعینات ہونے کی خوشخبری موصول ہوئی ہے۔

استاد یحییٰ القحطانی نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میں نے 1436ھ میں جازان یونیورسٹی سے گریجویشن کیا اور ٹیچرز لائسنس کا امتحان دیا۔اس کے بعد میں نے اساتذہ کی ملازمت کے لیے درخواست دی لیکن میں نے کئی سال اس کے لیے انتظار کیا۔ میں نے نو سال مختلف کمپینیوں میں سکیورٹی گارڈ سمیت کئی دوسرے پیشوں میں خدمات انجام دیں، مجھے اس پر بھی فخر ہے‘۔

برسوں کا انتظار

انہوں نے مزید کہا کہ سالوں کا انتظار میرے لیے کوئی آپشن نہیں تھا۔ اس لیے میں نے اپنی زندگی میں کئی کمپنیوں میں کام کر کے بہت سے پیشوں میں شامل ہونے کے لیے ویٹنگ لائن میں انتظار کیا۔ اس دوران میں نے مختلف ملازمتیں کیں جن میں کیشیئر، ڈرائیور، سکیورٹی گارڈ اور دیگر پیشے شامل ہیں۔ یہ سب ایسے پیشے ہیں جنہوں نے مجھے کام کی اہمیت کا احساس دلایا‘‘۔

پیشہ ورانہ مشکلات

خود کو درپیش مشکلات کے بارے میں یحییٰ القحطانی نے کہا کہ میں نے اپنے خاندان سے دور جازان کے علاقے میں تعلیم حاصل کی۔ میں نے یہی بہتر سمجھا اور خاندان نے اس میں میری مدد کی۔ پھر اپنے خاندان میں واپس آگیا۔

سکیورٹی گارڈ کی نوکری

القحطانی مزید کہتے ہیں کہ میں نے نظم و ضبط، ذمہ داری کا احساس، معاشرے کے مختلف طبقوں کے ساتھ برتاؤ اور انتہائی نگہداشت کے بارے میں اپنے ساتھی سکیورٹی گارڈزکے پیشے دوران سیکھا‘‘۔

القحطانی نے ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کیا جو ان کے ساتھ کھڑے رہے۔ ان کی زندگی بھر حوصلہ افزائی کرتے رہے۔ انہوں نےاپنے پہلے اسکول کے پرنسپل کا شکریہ ادا کیا، جہاں انہوں نے دو سال تک گارڈ کے طور پر کام کیا۔ اس کے تمام ساتھیوں اور طلباء کا بھی شکریہ ادا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں