سیاحوں کو بھیجنے والی کمپنی دیوالیہ،11 ہزار یورپی سیاح مصرمیں خوار ہونے لگے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایک یورپی ٹریول اینڈ ٹورازم کمپنی کے ذریعے مصر پہنچنے والے 11 ہزار سیاحوں کواس وقت ایک عجیب صورتحال کا سامنا کرنا پڑا جب انہیں بھیجنے والی کمپنی نے ان سیاحوں کے واجبات اور اخراجات مصری ہوٹلوں اور اداروں کو ادا کرنے کے بجائے اپنے دیوالیہ ہونے کا اعلان کر دیا۔

گیارہ ہزار سیاح

مصری وزیر سیاحت احمد عیسیٰ نے جرمنی اور آسٹریا کے سفیروں کے ساتھ ان سیاحوں کی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا جنہیں ’ایف ٹی آئی‘ نامی کمپنی نے سیاحتی دورے پر بھیجا تھا۔ ان سیاحوں نے کمپنی کو تمام ضروری ادائیگیاں کردی تھیں مگر کمپنی مصری ہوٹلوں اور مصر کے دوسرے سیاحتی مقامات کو ان سیاحوں کے واجبات ادا کرنے سے قاصر رہی۔

مصری حکام کی طرف سے جاری کردہ اعدادو شمارکے مطابق کمپنی کے دیوالیہ ہونے کے اعلان کے فوراً بعد مصری سیاحتی مقامات اور اداروں پر موجود سیاحوں کی تعداد 11 ہزار تک پہنچ گئی تھی اور اب یہ تعداد 5 ہزار سے بھی کم ہو چکی ہے۔

آج سوموارکو روزمصری وزارت سیاحت نے کمپنی کا نام ظاہر کرتے ہوئے بتایا کہ ان سیاحوں کو’ایف ٹی آئی‘ نامی کمپنی نے بھیجا تھا۔ پتہ چلا کہ یہ یورپ کا تیسرا سب سے بڑا سیاحتی ادارہ ہے، مگر کچھ عرصے سے یہ مالی مشکلات سے دوچار ہے۔ اس نے میونخ کی کورٹ آف فرسٹ انسٹینس میں بڑے قرضوں کی وجہ سے دیوالیہ قرار دیے جانے کی درخواست جمع کرائی‘۔

یورپی میڈیا نے انکشاف کیا ہے ایک مشہور مصری ارب پتی ’ساویرس‘ اس کمپنی کے 75 فیصد حصص کے مالک ہیں۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ کرونا بحران کے دوران کمپنی نے 595 ملین یورو سے زائد کی رقم جرمن حکومت سے حاصل کی اور اسے’ساویرس‘ کی طرف سے 2020ء میں بھرپور تعاون بھی ملا۔ جس کے بعد ان کا کمپنی میں حصص بڑھ کر 75 فی صد ہوگیا۔

مصری تاجر نے 2014ء میں پہلی بار کمپنی میں سرمایہ کاری کی۔اس نے مصر سے باہر ایک کمپنی میں 25 فی صد حصص خریدے۔

جرمن میڈیا نے انکشاف کیا کہ کمپنی دیوالیہ ہونے کے خطرے سے بچنے کے لیے جرمن حکومت سے تعاون حاصل کرنے میں گذشتہ ہفتے کے آخر میں ناکام رہی تھی۔ وزارت اقتصادی امور کے ترجمان نے کہا کہ حکومت بجٹ سے متعلق وجوہات کی بناء پر کمپنی کو بچانے کے لیے مداخلت نہیں کرے گی۔

جرمنی کا واجبات ادا کرنے کا وعدہ

مصر میں جرمن سفیر نے اس بات کی تصدیق کی کہ ایک انشورنس کمپنی اور جرمن حکومت سے وابستہ ایک اور فنڈ نے اخراجات ادا کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہوٹل کی سہولیات اور مصری سیاحتی کمپنیوں کے تمام اخراجات جنہیں سیاحوں نے کمپنی کے ساتھ اپنے ٹرپ پروگرام کے حصے کے طور پر بک کیا تھا محفوظ ہیں اورانہیں معاوضہ دیا جائے گا.

مصری وزیرسیاحت نے دونوں سفیروں سے مطالبہ کیا کہ وہ ہوٹل کے اداروں اور مصری سیاحتی کمپنیوں کے تمام واجبات کی ادائیگی کے لیے جرمن ٹریول انشورنس فنڈ کے لیے ضروری طریقہ کار کی تکمیل کو تیز کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں