مملکت کے حفاظتی اقدامات کی بنا پر دورانِ حج لو لگنے کے واقعات اور اموات میں کمی:رپورٹ

حج کے 40 سال سے زائد موسمیاتی اور طبی ڈیٹا کے مطابق گرمی کے مسائل کی تعداد میں خاطر خواہ کمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اس سال مئی میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق سعودی عرب کی حکومت کے اقدامات کی بدولت 40 سالوں میں حج کے دوران گرمی سے ہونے والی اموات اور فالج کے واقعات میں بالترتیب 47.6 اور 74.6 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی نے اتوار کو رپورٹ کیا کہ کنگ فیصل سپیشلسٹ ہاسپٹل اینڈ ریسرچ سنٹر (کے ایف ایس ایچ آر سی) کے زیرِ اہتمام "مکہ جانے والے عازمینِ حج کے لیے موسمیاتی صحت سے متعلق خطرات میں اضافہ" کے عنوان سے یہ مطالعہ کیا گیا۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ مکہ مکرمہ میں درجۂ حرارت میں 0.4 ڈگری سیلسیس فی عشرہ اضافے کے باوجود حکومتی اقدامات کارگر رہے ہیں۔

جرنل آف ٹریول میڈیسن میں شائع شدہ اس تحقیق میں دورانِ حج ماحول کے درجۂ حرارت میں اضافے اور صحت کی صورتِ حال کے درمیان تعلق کا جائزہ لیا گیا۔

ایس پی اے نے اس رپورٹ کے حوالے سے بتایا کہ حجاج کے لیے گرمی سے متعلقہ صحت کے خطرات کو کم کرنے کی غرض سے جو اقدامات کیے گئے ہیں، ان میں کھلی جگہوں پر ہوا کو ٹھنڈا کرنے کے لیے پانی کی پھوار والے پنکھوں کا استعمال شامل ہے۔

حکومت پانی اور چھتریاں بھی تقسیم کرتی ہے؛ اور اب 2010 سے مقدس مقامات پر المشاعر ٹرین سمیت ایئر کنڈیشنڈ گاڑیاں دستیاب ہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ مملکت نے دورانِ حج صحت کی نگہداشت کی مفت خدمات تک رسائی کے ساتھ ساتھ آگاہی مہم بھی چلائی ہے۔

رپورٹ میں پتا چلا ہے کہ حکومت نے طویل المدتی اقدامات شروع کیے ہیں جن میں ماحولیاتی انجینئرنگ اور عمارات کے ڈیزائن کے لائحہ عمل کو مربوط کرنا شامل ہے تاکہ قدرتی ہواداری کو بہتر بنایا اور مقدس مقامات پر درجۂ حرارت کو کم کیا جا سکے۔

سایہ دار جگہوں میں اضافہ ہوا ہے اور ہجوم کو کم کرنے کی کوششیں کی گئی ہیں۔

سالانہ حج کے موقع پر 180 سے زیادہ ممالک سے لاکھوں عازمین مملکت آتے ہیں، اس بات کے پیشِ نظر کے ایف ایس ایچ آر سی کا مطالعہ "دنیا بھر میں درجۂ حرارت میں اضافے کے حوالے سے ردِعمل کی منصوبہ بندی اور اسے بہتر بنانے کے لیے بہت زیادہ سائنسی اہمیت کا حامل ہے۔"

برانڈ فنانس کے مطابق کے ایف ایس ایچ آر سی شرقِ اوسط اور شمالی افریقہ میں مسلسل دوسرے سال سرِفہرست رہنے والا طبی ادارہ ہے اور عالمی سطح پر 20 ویں نمبر پر ہے۔

نیوز ویک میگزین نے اسے دنیا کے 250 بہترین ہسپتالوں میں بھی شامل کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں