’’ اپنی زندگی کے مشن میں ناکام رہا‘‘ اسرائیلی فوجی کمانڈر نے استعفی دیدیا

اسرائیلی فوج میں 30 سال خدمت کے بعد ملازمت اور سروس ختم کرنے کا فیصلہ کیا: جنرل ایوی روزن فیلڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی فوج میں غزہ ڈویژن کے کمانڈر بریگیڈیئر جنرل ایوی روزن فیلڈ نے غزہ کے اطراف اسرائیلی بستیوں کے تحفظ کے اپنی زندگی کے مشن میں ناکام ہونے کی بنا پر اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا اور فوج سے سبکدوش ہونے کا اعلان کردیا۔ القسام بریگیڈز نے سات اکتوبر کر غزہ کے اطراف کی بستیوں پر حملہ کرکے 1100 سے زیادہ افراد کو یرغمال بنا لیا تھا۔

غزہ ڈویژن کے کمانڈر کی طرف سے اسرائیلی فوج کے چیف آف سٹاف ہرزی ہیلیوی اور جنوبی ضلع کے کمانڈر اوری گورڈین کو باضابطہ طور پر ایک خط بھیجا گیا۔ جنرل ایوی روزن نے خط میں کہا کہ انہوں نے 143ویں ڈویژن (غزہ ڈویژن) کے کمانڈر کا عہدہ ختم کرنے اور فوج سے سبکدوش ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہر ایک کو اپنی ذمہ داری اٹھانا ہوگی اور میں 143 ویں ڈویژن کا ذمہ دار ہوں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ وہ اس وقت تک اسرائیلی غزہ ڈویژن کے سربراہ رہنے کا ارادہ رکھتے ہیں جب تک کہ کسی متبادل کی تقرری نہیں کی جاتی اور قیادت کو منظم اور ذمہ دارانہ انداز میں منتقل نہیں کردیا جاتا۔ اس نے یہ بھی کہا کہ وہ تحقیقات میں حصہ لینا جاری رکھیں گے تاکہ جو کچھ سات اکتوبر کو ہوا وہ دوبارہ نہ دہرایا جا سکے۔

اسرائیلی کا استعفی اس وقت سامنے آیا ہے جب اسرائیلی جنگی کمان کونسل کے رکن بینی گانٹز اور ان کی پارٹی کے باقی وزرا نے بغیر کسی وضاحت کے اتوار کو باقاعدہ حکومتی اجلاس کا بائیکاٹ کیا تھا اور بات کی جارہی تھی کہ وہ اتوار کی شام کو ہی اپنے استعفی کا اعلان بھی کریں گے۔

وزیر اعظم نیتن یاہو نے گانٹز کے اقدام کو تنقید کا نشانہ بنایا اور اپنے وزراء سے سیشن کے آغاز میں کہا کہ "یہ وقت سیاسی اور متعصبانہ وجوہات کی بنا پر تقسیم کا نہیں بلکہ اتحاد کا ہے۔ ہمیں اب بھی بڑے چیلنجز کا سامنا ہے۔ جو دشمن ہم سے چھٹکارا حاصل کرنا چاہتے ہیں اور ہمیں نیست و نابود کرنا چاہتے ہیں ان میں حماس، حزب اللہ، ایران اور اس کے ہتھیار اور مغربی کنارے میں دہشت گردی شامل ہیں۔

تاہم گانٹز نے یاھو کا کوئی جواب نہیں دیا۔ تاہم انہوں نے اپنے قریبی لوگوں کو کہا کہ نیتن یاہو نعرے لگانے میں اچھے ہیں، لیکن وہ معاملات کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ۔ وہ اتحاد اور ٹیم ورک جیسی چیز کو جانتے تک نہیں۔ نیشنل یونٹی پارٹی کے سربراہ گینٹز نے 18 مئی کو نیتن یاہو کو حکومتی پالیسی میں تبدیلی کے لیے 8 جون کی آخری تاریخ دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں