اسرائیل غزہ میں بھوک کو بہ طورہتھیار استعمال کرنا بند کرے:اردن کانفرنس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اردن میں ہونے والی علاقائی کانفرنس کے شرکاء نے اسرائیل پر زور دیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی میں جاری جنگ کے دوران بھوک کو شہریوں کے خلاف بہ طور ہتھیار استعمال کرنا بند کرے۔

اس موقعے پراردن کے فرمانروا شاہ عبد اللہ دوم نے آج منگل کو عمان میں منعقدہ کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ غزہ کو انسانی امداد کی فراہمی کے عمل کے لیے جنگ بندی کا انتظار نہیں کیا جا سکتا اور نہ ہی کسی سیاسی ایجنڈے تک پہنچنے کا انتظار نہیں کرنا چاہیے۔

"بھوک کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرنا بند کیا جائے"

کانفرنس سے خطاب میں مصری صدر عبد الفتاح السیسی نے اسرائیل پر زور دیا کہ وہ جنگ کے دوران بھوک کو ہتھیار کے طور پراستعمال کرنا بند کرےاور غزہ کی پٹی کو انسانی امداد کی فراہمی میں رکاوٹوں کو دور کرے۔

غزہ کی ایمرجنسی ہیومینیٹری رینس کانفرنس میں صدر السیسی کی تقریر میں کہا گیا ہے کہ وہ اسرائیل سے غزہ کا محاصرہ ختم کرنے کا پابند کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔غزہ کی پٹی کے لوگوں کی سزا میں فاقہ کشی کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرنا بند کیا جائے۔ تمام کراسنگز سے غزہ کی پٹی کو فوری ، پائیدار اور انسانی ہمدردی کے تحت امداد تک مناسب رسائی فراہم کی جائے۔

"کراسنگز کھولنے کا مطالبہ"

فلسطینی صدر محمود عباس نےکانفرنس سے خطاب کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اور بین الاقوامی برادری اسرائیل پر دباؤ ڈالے تاکہ غزہ کی تمام راہ داریاں کھولی جا سکیں۔

انہوں نے اردن میں منعقدہ کانفرنس سےخطاب میں کہا کہ "سلامتی کونسل اور تمام بین الاقوامی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ اسرائیل پر غزہ کی تمام زمینی راہ داریاں کھلوانے کے لیے دباؤ ڈالیں۔

جنگ بندی معاہدے پر زور

کانفرنس سے خطاب میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے اسرائیل اور حماس کے مابین تنازعہ سے متعلق تمام فریقوں سے مطالبہ کیا کہ وہ امریکی صدر جو بائیڈن کے ذریعہ پیش کردہ جنگ بندی منصوبے تک پہنچنے کے لیے ٹھوس کوششیں کریں۔

انہوں نے صدر بائیڈن کے ذریعہ تجویز کردہ امن اقدام کا خیرمقدم کیا ہے اور تمام فریقوں کو اس موقعے سے فائدہ اٹھانے اور معاہدے تک پہنچنے پر زور دیا ہے۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب غزہ میں وزارت صحت نے آج منگل کو ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ غزہ میں اسرائیلی بمباری میں مزید درجنوں افراد ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔ وزارت صحت کے مطابق سات اکتوبر کے بعد سے اسرائیلی فوجی حملے کے نتیجے میں 37،164 سے زیادہ فلسطینی ہلاک اور 84،832 زخمی ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں