امریکی وزیر خارجہ کی طرف سے فلسطینی اتھارٹی میں اصلاحات پر خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ کے وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے فلسطینی اتھارٹی کے وزیر اعظم محمد مصطفیٰ سے اردن میں ملاقات کی ہے۔ اس ملاقات کی اطلاع امریکی دفتر خارجہ نے منگل کے روز دی ہے۔

وزیر خارجہ انٹونی بلنکن 7 اکتوبر سے غزہ جنگ کے آغاز سے لے کر ان دنوں مشرق وسطیٰ کے مسلسل آٹھویں دورے پر ہیں۔ وہ پیر کے روز قاہرہ پہنچے۔ صدر السیسی سے ملاقات کی اور پیر کی رات ان کی ملاقاتیں اسرائیلی قیادت سے شروع ہوگئیں۔

منگل کے روز وہ اردن پہنچے ہیں۔ جہاں اردنی قیادت، شاہ عبداللہ اور اردنی وزیر خارجہ سے ملاقاتوں کے علاوہ انہوں نے فلسطینی اتھارٹی کے وزیر اعظم محمد مصطفیٰ سے بھی ملاقات کی ہے۔

محمد مصطفیٰ سے ملاقات کے دوران فلسطینی اتھارٹی میں نئی حکومت قائم ہونے کے بعد کی گئی اصلاحات کا خیر مقدم کرتے ہوئے وزیر خارجہ بلنکن نے کہا 'اس امر کی ضرورت ہے کہ ان اصلاحات کے نفاذ میں تسلسل رہے۔ تاکہ عوامی خواہشات کے مطابق چیزیں آگے بڑھ سکیں اور غزہ کے ساتھ ساتھ مغربی کنارے میں کامیابی ہو۔'

دفتر خارجہ کی طرف سے جاری کیے گئے اس بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے 'انٹونی بلنکن نے ملاقات کے دوران آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کے لیے امریکی مؤقف کا اعادہ کیا اور کہا کہ 'امریکہ فلسطینی ریاست کے قیام کی حمایت کرتا ہے اور ایسی ریاست کی حمایت کرتا ہے جو اسرائیل کی سلامتی کی ضمانت بنے۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں