.

لاہور 24200 پاکستانیوں کا انسانی پرچم بنانے کا عالمی ریکارڈ

1936طلبہ نے شاہی قلعہ کی عمارت کا ماڈل بنا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
پاکستان کے دل لاہور میں جاری پنجاب یوتھ فیسٹیول کے دوران نئے عالمی ریکارڈ بننے کا سلسلہ جاری ہے اور سوموار کو نیشنل ہاکی اسٹیڈیم میں شہریوں نے قطار در قطار اور ترتیب سے کھڑے ہو کر سب سے بڑا انسانی پرچم تیار کر کے ایک نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

گنیز ورلڈ ریکارڈ کے نمائندے کے مطابق پاکستان کے قومی پرچم کی تیاری میں چوبیس ہزار دو سو افراد نے حصہ لیا ہے۔ اس سے پہلے2007ء میں ہانگ کانگ میں اکیس ہزارسات سو چھبیس افراد نے انسانی پرچم بنا کر عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا۔

گنیز ورلڈ ریکارڈ کے نمائندے گیرتھ ڈیوز نے اس موقع پر کہا کہ پاکستانی شہریوں نے اپنے قومی پرچم کی تیاری میں حیرت انگیز اتحاد کا مظاہرہ کیا ہے ۔انھوں نے ریکارڈ کا اعلان کیا تو نیشنل ہاکی اسٹیڈیم پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج اٹھا۔ پرچم کی تیاری میں شریک نوجوانوں نے ہاتھوں میں پکڑے سفید اور سبز کارڈز فضا میں اچھال کر جشن منایا۔

قبل ازیں نیشنل ہاکی اسٹیڈیم ہی میں دنیا کی سب سے بڑی انسانی تصویر بنانے کا بھی نیا عالمی ریکارڈ قائم کیا گیا اور ایک ہزار نو سو چھتیس پاکستانی بچوں نے لاہور کے شاہی قلعے کا انسانی ماڈل بناکر گنیز بُک آف ورلڈ ریکارڈ میں اپنا اندراج کرا لیا۔

اس سے قبل دسمبر 2011ء میں امریکی ریاست ساوٴتھ کیرولینا میں ایک ہزار چار سو اٹھاون افراد سب سے بڑی انسانی تصویر بنا کر عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا۔واضح رہے کہ پنجاب یوتھ فیسٹیول میں گذشتہ دو روز کے دوران متعدد پرانے ریکارڈ ٹوٹے اور نئے ریکارڈ بنے ہیں۔ ان میں سے ایک لوگوں کا بیک وقت سب سے زیادہ تعداد میں قومی ترانہ پڑھنے کا ریکارڈ بھی ہے۔