.

طالبان کا بنوں میں پولیس اسٹیشن پرخودکش حملہ،8 افراد جاں بحق

مہلوکین میں پولیس اہلکار اور عام شہری شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
پاکستان کے شمال مغربی صوبہ خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع بنوں میں ایک پولیس تھانے پر طالبان کے حملے میں تین پولیس اہلکاروں سمیت آٹھ افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔ حملے میں چھے افراد زخمی ہوئے ہیں۔ان میں ککی پولیس تھانے کے سربراہ بھی شامل ہیں۔

بنوں پولیس کے ضلعی سربراہ ڈاکٹر وقاص نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ پیر کی صبح دو خودکش بمباروں نے فائرنگ کرتے ہوئے تھانے میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن تھانے کی حفاظت پر مامور اہلکاروں نے ان کی مزاحمت کی اور کافی دیر تک پولیس اہلکاروں اور حملہ آوروں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوتا رہا۔

اُنہوں نے بتایا کہ ایک خودکش بمبار قریبی مسجد میں داخل ہو گیا جہاں سے وہ پولیس پر فائرنگ کرتا رہا۔اس دوران ان دونوں بمباروں نے خود کو دھماکوں سے اڑا دیا۔ ڈاکٹر وقاص کے مطابق جاں بحق ہونے والے پولیس اہلکار تھانہ ککی میں تعینات نہیں تھے۔جب شدت پسندوں نے حملہ کیا تو وہ ککی گاؤں میں واقع اپنے گھروں سے پولیس کی مدد کے لیے وہاں پہنچے تھے اوروہ دہشت گردوں کی فائرنگ سے جاں بحق ہوگئے۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے پولیس اسٹیشن پر حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے۔اس جنگجو گروہ کے ترجمان احسان اللہ احسان نے ایک بیان میں کہا کہ "یہ حملہ گذشتہ ماہ طالبان کے سابق امیر بیت اللہ محسود کے بھتیجے ابراہیم محسود کے قتل کے ردعمل میں کیا گیا ہے''۔ یاد رہے کہ بیت اللہ محسود اگست 2009ء میں امریکی ڈرون حملے میں مارے گئے تھے۔