.

پاکستان کی بھارت کے خلاف پہلے ایک روزہ میچ میں 6 وکٹ سے جیت

مہندرا سنگھ دھونی کی شاندار سنچری بھی کام نہ آ سکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
پاکستان نے بھارت کی کرکٹ ٹیم کو تین ایک روزہ بین الاقوامی میچوں کی سیریز کے پہلے میچ میں چھے وکٹ سے شکست دے دی ہے۔

اتوار کو بھارت کے شہر چنائی میں کھیلا گیا پہلا ایک روزہ میچ بارش کے باعث ایک گھنٹے کی تاخیر سے شروع ہوا۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا اور بھارت کو بلے بازی کی دعوت دی۔ پاکستانی بالرز نے وکٹ میں موجود نمی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے نپی تلی بالنگ کی اور بھارت کے تیس سے بھی کم اسکور پر پانچ بلے باز پویلین کو لوٹا دیے تھے۔

پاکستان کے فاسٹ بالر جنید خان نے بھارت کے مجموعی اسکور سترہ پر اوپنر وریندر سہواگ کو بولڈ کر کے اپنی ٹیم کو پہلی کامیابی دلائی۔ اگلے ہی اوور میں محمد عرفان نے دوسرے اوپنر گوتم گمبھیر کو بولڈ کر کے بھارت کو مشکلات سے دو چار کر دیا۔ جنیدخان نے اپنے تیسرے اوور میں ان فارم بھارتی بلے بازوں ویرات کوہلی اور یووراج سنگھ کو بولڈ کر کے بھارتی بیٹنگ لائن کی کمر توڑ دی۔ ان کے بعد آنے والے روہت شرما چار رنز بنا کر جنید خان کا شکار بنے۔

بھارت کی 29 رنز پر پانچ وکٹیں گرنے کے بعد کپتان مہندراسنگھ دھونی اور سریش رائنا نے ذمے داری سے بیٹنگ کی۔ ان کے درمیان 73 رنز کی شراکت قائم ہوئی۔102 کے مجموعی ااسکور پر سریش رائنا محمد حفیظ کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔ اس کے بعد ایشون نے کپتان دھونی کا بھرپور ساتھ دیتے ہوئے ٹیم کو مکمل تباہی سے بچا لیا۔ دونوں بلے بازوں نے ساتویں وکٹ کی شراکت میں 125 رنز بنائے اور بھارت کے مجموعی اسکور کو 227 رنز تک پہنچا دیا۔

بھارت کی جانب سے ساتویں وکٹ کی شراکت میں یہ سب سے زیادہ اسکور تھا۔ بھارتی کپتان دھونی 113 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ ان کے ساتھ ایشون نے 31رنز بنائے اور وہ بھی آؤٹ نہیں ہوئے۔ دھونی نے اس میچ میں ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ میں اپنے سات ہزار رنز بھی مکمل کر لیے ہیں۔

پاکستان کی جانب سے جنید خان سب سے کامیاب بالر رہے۔انھوں نے چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔فاسٹ بالرمحمد عرفان اور آل راؤنڈر محمد حفیظ نے ایک ایک بھارتی کھلاڑی کو پویلین کی راہ دکھائی۔ بھارت کے 228رنز کے تعاقب میں پاکستان کا آغاز بھی کچھ اچھا نہیں تھا اور بھونیشور کمار کے پہلے اوور کی پہلی بال پر ہی محمد حفیظ بولڈ ہوگئے۔ اس کے بعد اظہر علی بیٹنگ کے لیے آئے۔ اظہر علی اور ناصر جمشید نے دوسری وکٹ کی شراکت میں 21 رنز بنائے۔

اس مجموعی اسکور پر پاکستان کو دوسرا نقصان اٹھانا پڑا اور اظہر علی 9 رنز بنانے کے بعد بھونیشور کمار کی بال پر روہت شرما کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے۔ ان کے بعد سابق کپتان اور تجربہ کار بلے باز یونس خان اپنے جوہر دکھانے کے لیے میدان آئے۔ انھوں نے ناصر جمیشد کے ساتھ مل کر محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے اسکور کو آگے بڑھانا شروع کیا۔

ان دونوں نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 112رنز بنائے اور مجموعی اسکور کو 133تک پہنچا دیا۔ اس موقع پر یونس خان58 رنز کی انفرادی اننگز کھیلنے کے بعد اشوک ڈینڈا کی بال پر روی چندرن ایشون کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے۔ ان کے بعد کپتان مصباح الحق بیٹنگ کے لیے کریز پر آئے۔ ان دونوں کھلاڑی نے چوتھی وکٹ کی شراکت میں 39رنز بنائے۔172کے مجموعی اسکور پر کپتان مصباح الحق 16رنز بنا کر ایشانت شرما کی بال پر بولڈ ہو گئے۔

مصباح الحق کے بعد شعیب ملک کھیلنے کے لیے آئے۔ انھوں نے ناصر جمییشد کے ساتھ مل کر بہترین بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور پانچویں وکٹ کی شراکت میں 56 رنز بنا کر پاکستان کو فتح سے ہم کنار کر دیا بھارت کی جانب سے اپنا پہلا ایک روزہ بین الاقوامی میچ کھیلنے والے بھونیشور کمار نے دو جبکہ ایشانت شرما اور اشوک ڈینڈا نے ایک ایک پاکستانی کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔ بھارتی کپتان مہندرا سنگھ دھونی کو ان کی شاندار اننگز پر مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کی بھارت کے خلاف اس شاندار کامیابی پر ملک بھر میں بھرپور خوشی کا اظہار کیا گیا ہے اور ٹیم کی جیت کے ساتھ ہی مختلف شہروں میں نوجوان سڑکوں پر نکل آئے اور انھوں نے ٹیم کے حق میں نعرے بازی کی۔ پاکستان کے صدر آصف علی زرداری اور وزیر اعظم راجا پرویز اشرف نے بھی قومی کرکٹ ٹیم کو اس شاندار کامیابی پر مبارکباد دی ہے۔ پاکستان اور بھارت کی ٹیموں کے مابین تین ایک روزہ میچوں کی سیریز کا دوسرا میچ 3جنوری 2013ء کو کولکتہ میں کھیلا جائے گا۔