کوئٹہ اور مینگورہ میں 6 بم دھماکے، 103 افراد جاں بحق، 230 زخمی

مینگورہ میں تبلیغی جماعت کے مرکز میں بم حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

ادھر شمال مغربی صوبہ خیبر پختونخوا کی وادیٔ سوات کے صدر مقام مینگورہ میں بم دھماکے میں اکیس افراد جاں بحق اور ستر سے زیادہ زخمی ہو گئے ہیں۔ مینگورہ شہر کے نواح میں تختہ بند روڈ پر واقع تبلیغی جماعت کے مرکز کو بم حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔

پولیس حکام نے پہلے تبلیغی جماعت کے مرکز میں گیس سلنڈر کے پھٹنے سے دھماکے کی اطلاع دی تھی لیکن بعد میں علاقے کے پولیس سربراہ اختر حیات نے بتایا کہ دھماکا بم کے پھٹنے کے نتیجے میں ہوا ہے۔ واقعے کے وقت کم سے کم ڈیڑھ ہزار افراد تبلیغی مرکز میں موجود تھے اور اس وقت ایک عالم دین کی تقریر جاری تھی۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ کے ایک اہلکار قیوم شاہ نے بتایا ہے کہ بم تبلیغی مرکز کے اندر نصب کیا گیا تھا۔دھماکے میں زخمی ہونے والے دو افراد کا کہنا تھا کہ جائے وقوعہ پر کوئی گیس سلنڈر موجود نہیں تھا اور اس کے دھماکے سے اتنی زیادہ ہلاکتیں نہیں ہو سکتی تھیں۔

زخمیوں اور جاں بحق افراد کی لاشوں کو ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز اسپتال میننگورہ منتقل کر دیا گیا ہے۔ اسپتال کے ایک ڈاکٹر نیاز محمد نے بتایا ہے کہ بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔اس لیے مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کا اندیشہ ہے۔ واضح رہے کہ تبلیغی جماعت کا کسی جنگجو یا سیاسی جماعت سے تعلق نہیں۔سوات میں یہ پہلا موقع ہے کہ اس خالص مذہبی جماعت سے وابستہ افراد کو بم حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں