سابق صدر پرویز مشرف کے جوڈیشیل ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

ملزم کے ''جیل ٹرائل'' کے لیے معاملہ اسلام آباد ہائی کورٹ کی منظوری تک مؤخر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں قائم انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے سابق فوجی صدر پرویز مشرف کو اعلیٰ عدلیہ کے ججوں کو معزول کرکے نظربند کرنے کے مقدمے میں تفتیش کے لیے مزید دوہفتے تک عدالتی حراست رکھنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت کے جج کوثرعباس زیدی نے ہفتے کے روز اپنے حکم میں کہا ہے کہ ''پرویزمشرف کے جوڈیشیل ریمانڈ میں چودہ روز کے لیے توسیع کی جارہی ہے۔انھیں اب اٹھارہ مئی کو عدالت میں پیش کیا جائے''۔

پولیس نے انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج سے سابق صدر کے ریمانڈ میں توسیع کی درخواست کی تھی اور کہا تھا کہ ان سے ابھی ان کی سرگرمیوں سے متعلق تفتیش مکمل نہیں ہوئی ہے۔سابق صدر کے وکلاء نے ان کی ضمانت کے لیے بھی درخواست دائر کی ہے۔اس کی چھے مئی کو سماعت کی جائے گی۔

عدالت سے سکیورٹی وجوہات کی بنا پر سابق فوجی صدر کے خلاف اسلام آباد میں واقع ان کے محل نما فارم ہاؤس میں مقدمہ چلانے کے لیے بھی کہا گیا ہے۔تاہم اس معاملے کو مزید کارروائی کے لیے موخر کردیا گیا ہے۔

عدالت کے جج نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ''میرے نوٹس میں یہ بات لائی گئی ہے کہ چیف کمشنر اسلام آباد نے ''جیل ٹرائل'' کے لیے ایک نوٹی فیکیشن جاری کیا ہے لیکن اس سلسلہ میں اسلام آباد ہائی کورٹ سے منظوری ضروری ہے''۔

سابق فوجی صدر 19 اپریل کو انسداد دہشت گردی کی عدالت کے حکم پر گرفتاری کے بعد سے اسلام آباد کے علاقے چک شہزاد میں واقع اپنے محل نما فارم ہاؤس میں جوڈیشیل ریمانڈ پر قید ہیں اور ان کی قیام گاہ کو حکام نے عارضی سب جیل قرار دے رکھا ہے۔ مارچ میں بیرون ملک سے پاکستان واپسی کے بعد سے انھیں عدالتوں میں گھسیٹا جارہا ہے اور انھیں شاید پہلی مرتبہ شاہانہ انداز میں گزری زندگی میں اس طرح کی صورت حال کا سامنا ہورہا ہے۔

ان کے خلاف ماتحت عدالتوں میں نومبر 2007ء میں اعلیٰ عدلیہ کے ججوں کو معزول کرکے نظربند کرنے ،اسی سال دسمبر میں سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کے قتل، اگست 2006ء میں بلوچ لیڈر اکبربگٹی کے فوجی کارروائی میں قتل اور لال مسجد آپریشن میں بے گناہوں کی ہلاکتوں کے الزامات میں الگ الگ مقدمات چلائے جارہے ہیں۔۔اس دوران یہ بھی افواہیں گردش کررہی ہیں کہ انھیں غیر مرئی طاقتیں رہا کروا کے بیرون ملک بھیجنے کی تیاری کررہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں