پاکستانی طالبان کا پشاور میں فوجی قافلے پر حملہ، 5 اہلکار شہید

متنی حملے کا ہدف پاک فوج کی ایک انجنیئرز بٹالین تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی طالبان نے پشاور میں ایک فوجی قافلے پر حملہ کیا ہے، جس کے نتیجے میں کم از کم پانچ فوجی اہلکار شہید ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق یہ حملہ جمعرات اور جمعہ کی درمیابی شب درہ آدم خیل سے ملحق پشاور کے مضافاتی علاقے متنی میں کیا گیا۔ حملے کا ہدف ہاکستان فوج کی ایک انجینیئر بٹالین کی گاڑی تھی جسے سرا خوارا کے علاقے میں نشانہ بنایا گیا ۔ اس سے چند گز کے فاصلے پر دہشتگردوں نے پولیس کی ایک بکتر بند گاڑی پبھی حملہ کیا جس سے چار پولیس اہلکار زخمی ہوگئے۔

حکام کے مطابق دہشتگردوں نے سیکیورٹی اہلکاروں کے قافلے پر پہلے راکٹ فائر کئے اور اس کے بعد فائرنگ شروع کردی۔ اس واقعے میں پانچ اہلکار شہید اور چھ زخمی ہوگئے۔

اسی علاقے میں ایک علاحدہ واقعے میں دہشتگردوں نے متنی پولیس سٹیشن کی بکتر بند گاڑی پر دستی بم سے حملہ کیا اور اس کے بعد اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جس سے چار پولیس اہلکار زخمی ہوگئے۔ ان اہلکاروں کو فوری طور پر لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کیا گیا۔

واقعے کے فوراً بعد پولیس اور نیم فوجی فرنٹیئر کانسٹبلری نے علاقے کو گھیرے میں لے کر آپریشن شروع کردیا ہے۔ اس دوران بھی فائرنگ کے تبادلے کی آوازیں سنائی دیتی رہیں۔ اس کے بعد ملحقہ سڑکوں پر ٹریفک جام ہوگیا اور گاڑیوں کی طویل قطاریں دیکھنے میں آئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں