پاکستان تحریک انصاف کی خاتون رہ نما کراچی میں قتل

الطاف حسین زہرہ شاہد کے قتل کے ذمہ دار ہیں: عمران خان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے کاروباری مرکز کراچی میں پاکستان تحریکِ انصاف کی خواتین ونگ کی مرکزی نائب صدر زہرہ شاہد حسین کو فائرنگ کرکے قتل کر دیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی چینل 'جیو' کے مطابق یہ واقعہ کراچی کے ڈیفنس فیز فور سے متصل گیزری اوینیو کے علاقے میں ہفتے کی شب گیارہ بجے کے قریب پیش آیا۔

پی ٹی آئی کے صوبہ سندھ کے ترجمان دوا خان کا کہنا ہے کہ زہرہ شاہد حسین کو ان کے گھر کے سامنے نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے قتل کیا ہے۔

زہرہ شاہد کی لاش کو نیشنل میڈیکل سنٹر ڈیفنس لایا گیا اور بعد میں پوسٹ مارٹم کے لیے ان کی لاش جناح ہسپتال منتقل کیا گیا۔

پی ٹی آئی کے صوبائی ترجمان کے مطابق زہرہ شاہد کو سر میں گولیاں لگیں۔ زہرہ شاہد کی عمر ساٹھ سے اوپر بتائی جاتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ابتدائی معلومات کے مطابق حملہ آور موٹر سائیکل پر سوار تھے۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے زہرہ شاہد کے قتل کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے قتل کے خلاف پورے ملک میں احتجاج کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ زہرہ شاہد کے قتل میں الطاف حسین کو ذمہ دار سمجھتے ہیں۔ متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے تحریک انصاف سندھ کی نائب صدر زہرہ شاہد حسین کے قتل کی مذمت کی ہے اور قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔

کراچی میں پی ٹی آئی کی مرکزی میڈیا سیل کی طرف سے جاری بیان میں زہرہ شاہد کی ہلاکت مذمت کی گئی ہے اور حکومت سے اس واقعے میں ملوث افراد کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ تحریکِ انصاف اس واقعے کے خلاف بھرپور احتجاج کرے گی۔

واضح رہے کہ یہ واقعہ ایسے وقت میں پیش آیا ہے کہ کراچی کے حلقے این اے 250 کے 43 پولنگ سٹیشنز پر اتوار کو دوبارہ انتخابات ہو رہے ہیں۔ متحدہ قومی موومنٹ نے قومی اسمبلی کے اس حلقے کے 43 پولنگ سٹیشنز پر دوبارہ پولنگ کے بائیکاٹ کا اعلان کر چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں