پارلیمانی جماعتوں کو خواتین اور اقلیتوں کی مخصوص نشستیں الاٹ

پی ایم ایل۔این 41 ارکان کے ساتھ سرفہرست،پی پی پی کی7، پی ٹی آئی کی 6 نشستیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پارلیمان کے ایوان زیریں قومی اسمبلی میں خواتین اور اقلیتوں کے لیےمخصوص کل ستر نشستوں کو پارلیمانی جماعتوں کو الاٹ کرنے کا نوٹی فکیشن جاری کردیا ہے جس کے مطابق پاکستان مسلم لیگ - نواز (پی ایم ایل ن) کے حصے میں سب سے زیادہ اکتالیس نشستیں آئی ہیں۔

الیکشن کمیشن کے ترجمان کے مطابق قومی اسمبلی میں خواتین کے لیے مخصوص ساٹھ میں سے پینتیس نشستیں مسلم لیگ کو ملی ہیں اور اقلیتوں کے لیے مختص دس میں سے چھے نشستیں اس جماعت کو الاٹ کی گئی ہیں جس کے بعد قومی اسمبلی میں پی ایم ایل این کی نشستوں کی تعداد 185 ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ قومی اسمبلی میں غیر مسلموں اور خواتین کے لیے مختص نشستیں ہر پارٹی کی عام انتخابات میں حاصل کردہ عام نشستوں کی کل تعداد کی بنیاد پر متناسب شرح کے حساب سے الاٹ کی جاتی ہیں۔قومی اسمبلی میں خواتین کے لیے 60 نشستیں اور اقلیتوں کے لیے دس نشستیں مخصوص ہیں۔قومی اسمبلی کی کل 342 نشستیں ہیں۔ان میں سے 268 پر گیارہ مئی کو عام انتخابات ہوئے تھے۔قومی اسمبلی کے چار حلقوں میں مختلف وجوہ کی بنا پر انتخاب ملتوی کردیا گیا تھا۔

سابق حکمراں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کو خواتین کی مخصوص نشستوں میں سے سات ملی ہیں اور ایک اقلیتی نشست اس کے حصے میں آئی ہے جس کے بعد اس کی پارلیمان کے ایوان زیریں میں نشستوں کی کل تعداد 40 ہوگئی ہے. پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کو خواتین کے لیے مخصوص چھے نشستیں ملی ہیں اور اس کو ایک اقلیتی نشست دی گئی ہے۔اس طرح وہ قومی اسمبلی میں 35 ارکان کے ساتھ تیسری بڑی پارلیمانی پارٹی بن گئی ہے۔

ان کے علاوہ متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کو خواتین کی چار نشستیں اور ایک اقلیتی نشست الاٹ کی گئی ہے اور اب قومی اسمبلی میں اس کی نشستوں کی تعداد تیئس ہوگئی ہے۔جمعیت علمائے اسلام (ف) کے حصے میں خواتین کی تین اور ایک اقلیتی نشست آئی ہے۔اس طرح اب جے یو آئی کی قومی اسمبلی میں 14 نشستیں ہوگئی ہیں۔

جماعت اسلامی پاکستان، نیشنل پیپلز پارٹی (این پی پی)، پختونخواہ ملی عوامی پارٹی ،پاکستان مسلم لیگ (ق) اور فنکشنل مسلم لیگ کو خواتین کے لیے مخصوص نشستوں میں سے ایک ایک نشست الاٹ کی گئی ہے۔پی پی پی اورمسلم لیگ (ق) کے درمیان پنجاب سے قومی اسمبلی کی ایک مخصوص نشست پر ٹائی پڑگئی ہے اور دونوں جماعتوں میں سے کسی ایک کے کامیاب امیدوار کا فیصلہ ٹاس کے ذریعے کیا جائے گا۔

الیکشن کمیشن نے پی ایم ایل این سے کہا ہے کہ وہ 29 مئی تک قومی اسمبلی کی نو مخصوص نشستوں اور پنجاب اسمبلی کی سات مخصوص نشستوں کے لیے اپنے خواتین امیدواروں کے نام بھجوا دے کیونکہ اس نے اس سے پہلے الیکشن کمیشن کے پاس قومی اسمبلی کی خواتین کی مخصوص نشستوں کے لیے تیئس امیدواروں کے نام جمع کرائے تھے اور ان تمام کو کامیاب قرار دے دیا گیا ہے۔

الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق چاروں صوبائی اسمبلیوں میں خواتین اور اقلیتوں کے لیے مخصوص نشستیں بھی پارلیمانی جماعتوں کو ان کے نومنتخب اراکین کے تناسب سے الاٹ کردی گئی ہیں۔صدر آصف علی زرداری نے پاکستان کی نومنتخب قومی اسمبلی کا افتتاحی اجلاس یکم جون بروز ہفتہ طلب کر لیا ہے اور اس روز نومنتخب اراکین اپنی رکنیت کا حلف اٹھائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں