.

بھارتی لڑاکا طیاروں کی پاکستانی فضائی حدود میں در اندازی

وارننگ پر بھارتی جیٹ 'بحفاظت' بھارت واپس چلے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کے لڑاکا طیاروں نے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کی ہے۔ نجی ٹی وی 'جیو' کے مطابق بھارتی طیاروں نے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی ہیڈ سلیمانکی کے قریب کی تاہم پاکستانی فضائیہ کی جانب سے وارننگ پر بھارتی طیارے اپنی حدود میں لوٹ گئے۔

درایں اثنا دفتر خارجہ کے ترجمان نے بھارتی جنگی طیاروں کی فضائی حدود کی خلاف ورزی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بھارت پاکستان کیساتھ کیئے گئے دوطرفہ معاہدوں کا احترام کرے۔ آج کا واقعہ 1991 کے پاکستان ، بھارت فضائی معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔

سول ایوی ایشن ذرائع کے مطابق منگل کے روز دو بھارتی طیاروں نے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کی اور بھارتی طیارے لاہور سے 170 کلومیٹر دور ہیڈسلیمانکی کی فضا میں ڈیڑھ منٹ تک پاکستانی فضائی حدود میں رہے۔ طیارے پاکستانی حدود میں پانچ کلومیٹر اندر تک گھس آئے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت دفاع کو واقعہ کی اطلاع سے دی گئی ہے جبکہ تحریری رپورٹ آئندہ 24 گھنٹے میں وزارت کو فراہم کر دی جائے گی جو بعد میں وزارت خارجہ کے حوالے کی جائے گی اور پھر اقوام متحدہ کے قوانین کے مطابق بھارت سے اس بارے میں احتجاج کیا جائے گا۔ یاد رہے وزیر دفاع کا عہدہ خود وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے اپنے پاس رکھا ہے.

پاک فضائیہ کے ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ بھارتی طیارے 3 میل تک پاکستانی حدود کے اندر گھس آئے اور فاضلکہ سیکٹر میں 2 منٹ تک پرواز کرتے رہے۔ بھارتی طیاروں کی پاکستانی حدود میں موجودگی کی اطلاع پر پاک فضائیہ نے فوری طور پر 2 طیارے روانہ کئے تاہم پاکستانی طیاروں کے متعلقہ سیکٹر تک پہنچنے سے پہلے ہی بھارتی طیارے واپس چلے گئے۔

واضح رہے کہ بھارتی طیاروں کی یہ پہلی خلاف ورزی نہیں اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ بھارتی جنگی طیارے پاکستان کی حدود کی خلاف ورزی کرچکے ہیں۔