.

سعودی عرب:مسلح ڈکیتی کے جُرم میں دو پاکستانیوں کے سرقلم

بنک صارفین کو بندوق کی نوک پر لوٹنے کے جرم میں سزائے موت پر عمل درآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں مسلح ڈکیتی کی وارداتوں میں ملوث ہونے کے جرم میں دو پاکستانیوں کے سر قلم کردیے گئے ہیں۔

سعودی وزارت داخلہ کے جاری کردہ بیان کے مطابق ان دونوں مجرموں کے ساحلی شہر جدہ میں سوموار کو سرقلم کیے گئے ہیں۔انھوں نے عدالت کے روبرو بنک صارفین کو گن پوائنٹ پر لوٹنے کے لیے ایک گینگ قائم کرنے کا اقرار کیا تھا۔ان دونوں پاکستانیوں پر مسلح ڈکیتی کی وارداتوں میں ملوث ہونے کے الزام میں فرد جرم عاید کی گئی تھی اور عدالت نے انھیں سزائے موت کا حکم دیا تھا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں سخت اسلامی سزائیں نافذ ہیں۔قتل ،منشیات کی اسمگلنگ، بدکاری اور مسلح ڈکیتی جیسے جرائم میں قصوروار دیے جانے والے مجرموں کو سزائے موت دی جاتی ہے اور بالعموم کھلے عام ان کے سرقلم کیے جاتے ہیں۔

اے ایف پی کے فراہم کردہ اعداد وشمار کے مطابق سعودی عرب میں جنوری سے اب تک مختلف جرائم میں ملوث چون افراد کے سرقلم کیے جاچکے ہیں۔سال 2012ء میں سعودی عرب میں چھہتر افراد کو موت سے ہم کنار کیا گیا تھا۔انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال انہتر افراد کے سرقلم کیے گئے تھے۔