.

افغانستان سے نیٹو طیاروں کی پاکستانی حدود کی خلاف ورزی

طیارے قبائلی ایجنسی پر کئی منٹ پرواز کے بعد واپس چلے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے زیر انتظام قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں طورخم سرحد کے مقام پر نیٹو طیاروں نے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی اور کئی کلومیٹر تک پاکستانی حدود کے اندر گھس آئے۔

پاکستان ٹیلی ویژن کے مطابق دو نیٹو طیارے معمول کی پرواز کے دوران پاک افغان طورخم بارڈر سے پاکستانی فضائی حدود کے اندر داخل ہوئے اور کئی منٹ تک خیبرایجنسی کے مختلف علاقوں میں پرواز کرنے کے بعد واپس افغانستان چلے گئے۔

فضائی حدود کی خلاف ورزی کے علاوہ طیاروں نے کسی قسم کی کارروائی نہیں کی۔

اس سے پہلے بھی نیٹو طیارے شمالی وزیرستان، کرم ایجنسی، مومند ایجنسی اور خیبر ایجنسی میں کئی بار پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرچکے ہیں۔

واضح رہے کہ 26 نومبر 2011ء میں امریکی افواج نے پاکستانی سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سلالہ چیک پوسٹ پر فضائی حملہ کردیا تھا جسکے دوران 25 سے زائد پاکستانی فوجی جاں بحق ہوئے تھے۔

اس کے بعد پاکستان نے شدید احتجاج کرتے ہوئے تقریباً سات ماہ تک پاکستانی سرزمین سے امریکی اور نیٹو افواج کو سامان کی فراہمی معطل کررکھی تھی۔ جولائی 2012ء میں امریکا کی معافی کے بعد نقل و حمل کا یہ سلسلہ دوبارہ جاری ہوا تھا۔