.

پاکستان کو گھمبیر مسائل سامنا ہے: نواز شریف

حل کیلئے اتحاد اور دیر پا لائحہ عمل ضروری ہے،آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیر اعظم میاں نواز شریف نے کہا ہے کہ'' پاکستان کو گھمبیر مسائل اور کئی چیلنجز کا سامنا ہے ۔ ان مسائل کے حل کے لئے ہم سب کو اکٹھا ہونا چاہیئے اور اس کے دیرپا حل کے لئے مل کر لائحہ عمل طے کر نا چاہئے۔'' میاں نواز شریف دہشت گردی کے خلاف بلائی گئی اے پی سی سے افتتاحی خطاب کر رہے تھے۔

آل پارٹیز کانفرنس میں پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل کیانی اور آئی ایس آئی کے سربراہ جنرل ظہیر الاسلام خصوصی بریفنگ دے رہے ہیں، جبکہ تمام اہم قومی سیاسی جماعتوں کے قائدین کانفرنس مں شریک ہیں۔

وزیراعظم نے اپنے افتتاحی خطاب میں شرکاء کو یقین دلایا کہ وہ دہشتگردی اور معیشت کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے کسی قسم کی سیاست کریں گے نہ سمجھوتہ کریں گے۔

وزیراعظم نے کہا کہ'' پاکستان اس وقت دہشت گردی کی گرفت میں ہے۔ مجھے امید ہے پاکستان کے سب سے بڑے شہر اور صنعتی مرکز کراچی کے معاملے پر پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم سمیت دیگر جماعتوں کے تعاون سے بہتری آئے گی اور ملک کو در پیش معاملات کسی نہ کسی حل کی جانب بڑھیں گے ۔''

انہوں نے مزید کہا '' ہمیں پاکستان کے 18 کروڑ عوام کو مسائل سے نکالنا ہے، اگر ہم اکٹھے نہیں ہوں گے تو نقصان پاکستان کا ہو گا۔ دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہزاروں افراد شہید ہو چکے ہیں،دہشت گردی کے باعث ملک میں سرمایہ کاری نہیں ہو رہی، دہشت گردی کے باعث لوگ سرمایہ کاری کرنے سے گھبرا رہے ہیں، پاکستان دہشتگردی کی گرفت میں ہے اور میں یہ بار بار کہتا تھا اس مسئلے پر اکٹھے بیٹھنا ہو گا۔''

طالبان سے مذاکرات کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ'' وہ مذاکرات کی بات کئی بار کر چکے ہیں۔ اگر ہم نے عوام کیلئے کام کیا توان کو جمہوریت سے توقعات بڑھیں گی لیکن آل پارٹیز کانفرنس سرکاری اور نجی طور پر پہلے بھی ہو چکی ہیں تاہم کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے ، اس مرتبہ مجھے امیدیں ہیں اور ہم کوئی اچھا نتیجہ سامنے لا سکیں گے ۔''