افغان فورسز کی سرحدی علاقے میں فائرنگ، 5 پاکستانی جاں بحق

بلوچستان کے ضلع ژوب میں پیش آئے واقعہ کے بارے میں متضاد اطلاعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

افغان فورسز نے پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع ژوب کے سرحدی علاقے میں بلااشتعال فائرنگ کی ہے جس کے نتیجے میں پانچ شہری جاں بحق اور بیس زخمی ہوگئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق افغان بارڈر سکیورٹی فورسز نے ضلع ژوب کے پاک افغان سرحد پر واقع علاقے قمر الدین کاریز میں بدھ کی صبح بلا اشتعال فائرنگ کی ہے۔ بعض میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان فورسز اور مقامی قبائلیوں کے درمیان اس علاقے میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہے جس کے نتیجے میں ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ زخمیوں میں لیوی کا ایک اہلکار بھی شامل ہے۔

پاکستان کے سرکاری خبررساں ادارے اے پی پی نے حکام کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ سرحدی علاقے قمرالدین کاریز میں افغان سکیورٹی فورسز کی بلااشتعال فائرنگ کے نتیجے میں لیون قبیلے سے تعلق رکھنے والے پانچ افراد مارے گئے ہیں۔ قمرالدین کاریز کا علاقہ ژوب شہر سے 350 کلومیٹر دور واقع ہے۔

پاک افغان سرحد پر واقع اس علاقے میں فائرنگ کے اس واقعہ کے بارے میں متضاد اطلاعات سامنے آئی ہیں۔ ژوب کے ڈپٹی کمشنر تاج محمد نے امریکی خبررساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ مقامی قبائلی غیر نشان زدہ سرحدی علاقے میں اپنے مویشیوں کے لیے چارہ لینے گئے تھے کہ اس دوران ان پر افغان فورسز نے بلااشتعال فائرنگ کردی۔

دوسری جانب افغانستان کے جنوب مشرقی صوبہ پکتیکا کے پولیس سربراہ دولت خان زدران کا کہنا ہے کہ افغان سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں مارے جانے والے افراد طالبان جنگجو ہیں اور تین مرنے والوں کی لاشیں ابھی تک افغان علاقے میں موجود ہیں۔

سرحدی علاقے میں پیش آئے اس واقعے کے بارے میں پاکستانی یا افغان وزارت خارجہ نے تادم تحریر کوئی بیان جاری نہیں کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں