خان سجنا تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ مقرر

نئے امیر کو پاکستان سے مذاکرات کا حامی سمجھا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

تحریک طالبان پاکستان کے حکیم اللہ محسود کے ڈرون حملے میں مارے جانے کے بعد ان کے جان نشین کے طور پرطالبان کے ولی الرحمان گروپ کے سربراہ، کمانڈر خان سید سجنا کے حق میں رائے سامنے آگئی ہے۔ خان سید سجنا بھی قبائلی اعتبار سے محسود ہیں اور اس وقت ٹی ٹی پی میں سب سے زیادہ طاقتور کمانڈر سمجھے جاتے ہیں۔

ان کا اصل نام خان سید ہے، لیکن سجنا کے نام سے معروف ہیں۔ خان سجنا کو متعددد '' کامیاب'' عسکری کارروائیوں کا ماسٹر مائنڈ سمجھا جاتا ہے جن میں جیل سے چار سو قیدیوں کو رہا کرانے کی سوچ دینے اور اسے قابل عمل منصوبہ بنانے کے علاوہ پاک فضائیہ کے ائر بیس پر کارروائی کا بھی ذمہ دار سمجھا جاتا ہے۔

خان سجنا سے منسوب ان بڑی کارروائیوں کے باوجود انہیں پاکستان کی حکومت سے مذاکرات کا حامی قرار دیا جاتا ہے۔ واضح رہے کہ 2009 میں تحریک طالبان کا سربراہ بننے والے حکیم اللہ محسود کو جمعہ کے روز ان کے گھر ڈرون حملے میں ہلاک کر دیا گیا ہے۔ جن کی آج تدفین کی تیاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں