.

راولپنڈی: کرفیو آج رات ختم ہو جائے گا

کرفیو کا نفاذ جمعہ اور ہفتے کی درمیانی شب فساد پھوٹنے پر کیا گیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد سے جڑواں شہر راولپنڈی میں یوم عاشور کے اختتام پر ہونے والے گروہی تصادم کے دوران سات افراد کے مارے جانے اور متعدد کے زخمی ہو جانے پر نافذ کیا گیا کرفیو امکانی طور پر آج رات بارہ بجے ختم کر دیا جائے گا۔

یوم عاشور کے موقع پر پاکستان میں اس بار غیر معمولی سکیورٹی انتظامات کیے گئے تھے ۔ جس کی وجہ سے بالعموم عاشورہ محرم پرامن گزرا اور کہیں بھی بد امنی کا کوئی بڑا واقعہ پیش نہیں آیا، البتہ راولپنڈی میں گڑبڑ پھیل گئی۔

روائتی طور پر پاکستان میں بد امنی روکنے کیلیے یوم عاشور کے موقع پر پولیس کے علاوہ رینجرز اور فوج کی خدمات بھی حاصل کی جاتی ہیں۔

جمعہ کے روز دس محرم کے حوالے سے فوج بھی شہروں میں امن وامان کی صورتحال سے نمنے کیلیے الرٹ تھی، تاہم راولپنڈی میں شام کے وقت بدامنی پھوٹ پڑی۔

اس بدامنی اور دوفرقوں کے افراد کے درمیان تصادم کی وجہ ایک سنی مدرسے پر حملہ بھی بتایا جاتا ہے جس کے نتیجے میں کم از کم سات افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ درجنوں افراد زخمی ہو گئے۔

اسی دوران راولپنڈی کی معروف کلاتھ مارکیٹ میں آگ لگ گئی جس سے دسینوں دکانوں آگ کی لپیٹ میں رہیں ، بگڑتی صورت حال کے پیش نظر فوج نے پورے علاقے کو گھیرے میں لے لیا، تاہم مزید بگاڑ سے بچنے اور شرپسندوں سے سختی سے نمٹنے کی غرض سے جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب راولپنڈی کے بیشتر حصوں میں کرفیو نافذ کر دیا گیا۔

سکیورٹی حکام کے مطابق صورت حال قابو میں ہے اس لیے امکانی طورپر ہفتے کی شب بارہ بجے کرفیو اٹھا لیا جائےگا۔ کرفیو کی وجہ سے راولپنڈی میں ہفتے کے روز بھی زندگی معمول پر نہ آسکی ، میڈیا رپورٹس کے مطابق ہفتے کے روز نصف درجن سے زائد افراد کو کرفیو کی خلاف ورزی پر گرفتار کیا گیا ہے۔