پاکستان پر ڈرون حملے کسی قیمت پر قبول نہیں: نواز شریف

ڈرونز پر سیاست درست نہیں، لاوڈ سپیکر کا غلط استعمال روکنے کا عندیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دنیا میں امریکی ڈرونز کے ذریعے میزائل حملوں میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ملک پاکستان کے وزیر اعظم میاں نواز شریف نے جمعرات کے روز صوبہ خیبر پختونخوا میں ہونے والے پہلے ڈرون حملے پر کہا ہے کہ ''ڈرون حملے کسی قیمت پر قابل قبول نہیں ہیں۔''

وزیر اعظم پاکستان نے نسبتا جذباتی انداز میں اپنی حکومت پر اپوزیش جماعتوں کے اس الزام کا بھی جواب دیا جن میں حکومتی پالیسی کو دوغلے پن کا شکار قرار دیا جاتا ہے۔ میاں نواز شریف نے اس موقع پر ملک میں لاّوڈ سپیکر کے غلط استعمال کو روکنے کا بھی عندیہ دیا ہے۔

انہوں نے قومی مشاورتی کانفرنس سے اپنے خطاب میں کہا '' ہم رسمی لوگ نہیں ہیں، ہم دل سے چاہتے ہیں کہ ڈرون حملے بند ہوں۔'' انہوں نے ڈرون حملوں کو ظلم اور زیادتی کا نام دیا۔ اور کہا ''امریکا بھی جانتا ہے کہ ہم محض رسمی طور پر ڈرون حملوں کے خلاف نہیں ہیں۔''

میاں نواز شریف نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ ان کی حکومت پر دوہری پالیسی کا الزام عاید کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے ڈرون حملوں کے نام پر سیاست کو بھی ناپسند کیا۔

وزیر اعظم نے اس موقع پر ملک میں لاوڈ سپیکرز کے ذریعے شدت پسندی، فرقہ واریت اور دہشت گردی کو فروغ دینے کے بارے میں ناراضی ظاہر کی اور کہا یہ ممکن نہیں کہ لاوڈ سپیکر کے اس استعمال کا حکومت منہ دیکھتی رہے اور کارروائی نہ کرے۔''

نواز شریف نے ملک سے دہشت گردی کے خاتمے کیلے بنائے گئے نئے قانون کا ذکر کیا اور کہا دہشت گردوں اور فرقہ پسندوں کے خلاف مثالی ٹرائل کر کے انہیں سزائیں دی جانی چاہییں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں