.

پاکستان میں کرپشن کا راج، بھارتی معیشت آگے نکل گئی: نواز شریف

وزیر اعظم کا نوجوانوں کے لئے قرضہ سکیم کی تقریب سے خطاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف نے ملک کو درپیش مسائل کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے ہمسایہ ملک بھارت نوے کی دہائی میں معاشی میدان میں پاکستان سے پیچھے تھا لیکن اب پاکستان سے دس گنا آگے نکل چکا ہے جبکہ نوے کی دہائی میں پاکستان کے معاشی انڈیکیٹرز بھارت سے بہتر تھے حتی کہ پاکستانی روپے کی قدر بھی بھارت روپے س جبکہ نوے کی دہائی میں پاکستان کے معاشی انڈیکیٹرز بھارت سے بہتر تھے حتی کہ پاکستانی روپے کی قدر بھی بھارت روپے سے زیادہ تھی۔

انہوں نے صوبہ پنجاب کے اہم جنوبی ضلع بہاولپور میں نوجوانوں کیلیے حکومتی قرضوں کی سکیم کے سلسلے میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے ۔ وزیر اعظم نے اس امر اعترف کیا کہ ملک میں بجلی کا مسئلہ ان کی حکومت آنے کے بعد بھی حل نہیں ہو سکا، انہوں نے کہا اس بارے میں وہ قوم سے جھوٹ نہیں بولنا چاہتے ہیں کیونکہ جھوٹ کا کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔

واضح رہے پاکستان گزشتہ کئی برسوں توانائی کے مسائل کا سامنا کر رہا ہے۔ اس وجہ سے پاکستان کا صنعتی شعبہ ہی نہیں بجلی اور گیس کے گھریلو صارفین کو بھی لمبے عرصے سے طویل لوڈشیڈنگ کا سامنا کر پڑ رہا ہے۔ آجکل ملک میں گیس کی سپلائی متاثر ہونے کی وجہ گھروں میں چولہوں کا جلانا بھی مشکل ہوگیا ہے۔

میاں نواز شریف نے حکومت کی مشکلات اور ترقی کی راہ میں رکاوٹوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا ملک میں کرپشن کا راج ہے اور ان کی حکومت کو پچھلی حکومت کے پانچ برسوں کی وجہ سے مسائل ملے ہیں۔

انہوں نے ملک میں بڑے لوگوں کے لیے ایک قانون اور عام لوگوں کی،لیے دوسرے قانون کو بھی ملکی استحکام اور ترقی میں رکاوٹ قرار دیا اور کہا بڑے چھوٹے کی تمیز کی بنیاد پر قانون کا ہونا کسی معاشرے میں ظلم کے نظام کے مترادف ہے ۔ میاں نواز شریف نے کہا وہ یقین رکھتے ہیں کفر کا نظام تو باقی رہ سکتا ہے لیکن ظلم کا نظام رکھنے والا معاشرہ آگے نہیں چل سکتا۔ معاشی تنگی کا حوالہ دیتے ہوئے ان کا کہنا بجلی پیدا کرنے کے یونٹ لگانے کیلیے کیلیے وسائل فراہم نہیں ہیں۔

اپنی یوتھ قرضہ سکیم کے کی راہمیں پیش آمدہ مشکلات پر ان کا کہنا تھا ملکی معاشی صورتحال کے باعث کوئی بھی یہ سکیم شروع کرنے کو تیار نہ تھا لیکن انہوں زبردستی یہ سکیم شروع کرائی ہے۔ انہوں نے نوجوانوں پر اعتماد کرنے کی بات کی اور کہا آج کے نوجوان کل معمار وطن ہوں گے۔ اس لیے انہیں قرضے دیتے ہوئے ان پر اعتماد نہ کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔