.

پشاور میں ایرانی قونصل خانے کے قریب خود کش حملہ

نیم فوجی دستے کے دو اہلکار جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں ہونے والے خودکش دھماکے میں فرنٹیئر کانسٹیبلری کے دو اہلکار جاں بحق ہوگئے ہیں۔ پولیس کے مطابق یہ دھماکہ پیر کی شام یونیورسٹی ٹاؤن کے علاقے میں واقع ایرانی قونصل خانے کی سکیورٹی کے لیے قائم چیک پوسٹ پر ہوا۔

ایس پی کینٹ کے مطابق خود کش دھماکا ایف سی کی چیک پوسٹ کے قریب ہوا۔ دھماکے میں 2 ایف سی اہلکار جاں بحق جبکہ 9 افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ پولیس کے مطابق گاڑی میں موجود ایک دہشتگرد نے کُود کر خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ خود کش حملہ آور نے پشاور کے انتہائی حساس علاقے کو دہشتگردی کا نشانہ بنایا۔ دھماکے کی جگہ کے قریب ایرانی قونصلیٹ، امریکی قونصلیٹ اور غیر ملکی این جی اوز کے دفاتر بھی ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق دھماکا اتنا زور دار تھا کہ اس کی آواز دور دور تک سنی گئی۔ دھماکے کے فوری بعد شدید فائرنگ بھی کی گئی جس سے لوگوں میں خوف و ہراس اور افراتفری پھیل گئی۔ دہشتگردی واقعہ کی اطلاع ملتے ہی قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار، امدادی ٹیمیں اور بم ڈسپوزل سکواڈ کا عملہ جائے حادثہ پر پہنچ گیا اور علاقے کو گھیرے میں لے کر تفتیش شروع کر دی گئی۔ امدادی ٹیموں نے ایمبیولینسوں کے ذریعے خود کش دھماکے میں شہید ہونے والے ایف سی اہلکاروں اور دیگر زخمیوں کو خیبر ٹیچنگ ہسپتال منتقل کیا گیا۔ دھماکے میں دو زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے. سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر آپریشن شروع کر دیا ہے۔

درایں اثنا ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں اپنے کردار کے لیے مشہور کمانڈر مست گل کے ترجمان نے پشاور میں ایرانی قونصل خانے کے قریب خود دھماکے کی ذمہ داری قبول کرلی ہے۔

خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق ترجمان کا کہنا تھا 'ہم نے ایرانی قونصل خانے اور اس میں ایرانی باشندوں کو ہدف بنایا تھا لیکن بدقسمتی سے وہ محفوظ رہے۔' ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم ہر جگہ ایرانی تنصیبات اور شیعہ برادری کو نشانہ بناتے رہیں گے۔

دوسری جانب خیبر ایجنسی کے علاقے جمرود میں ایف سی کی گاڑی کے قریب دھماکے کی بھی اطلاعات ہیں۔ سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق دہشت گردوں کی جانب سے اس حملے میں میجر حبیب کی گاڑی کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی لیکن وہ اس حملے میں محفوظ رہے تاہم گاڑی کو نقصان پہنچا ہے.

واضع رہے کہ پیر کے روز ہی پشاور کے مختلف علاقے بم دھماکوں سے گونج اٹھے تھے۔ پشاور کے پوش علاقے حیات آباد میں فیز سیون میں رہائشی پیر سید بادشاہ کے گھر کے باہر بارودی مواد پھٹنے سے دھماکا ہوا جس سے سید بادشاہ کے گھر سمیت کئی گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے۔ دھماکے سے خوف و ہراس پھیل گیا۔

ادھر افغان کالونی کا علاقہ بھی دھماکے سے گونج اٹھا جہاں ایک گھر کے باہر دھماکا کیا گیا۔ تھانہ یکہ توت کی حدود شہباز ٹاؤن میں تاجر حاجی میجر کے گھر کے باہر بارودی مواد پھٹنے سے دھماکا ہوا جس سے متعدد گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے تھے۔ واقعہ کی اطلاع ملنے پر پولیس اور امدادی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں اور واقعات کی تحقیقات شروع کر دیں ہیں۔