.

پاکستان: 56000 نوجوانوں کا عالمی ریکارڈ، ملکر قومی پرچم لہرایا

تین دن میں 29 ریکارڈز کیلیے گینیز بک میں نام لکھوایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے ثقافتی مرکز لاہور میں عالمی ریکارڈ قائم کرنے کا سلسلہ جاری ہے اور ہفتے کے روز چھپن ہزار نوجوانوں نے مل کر قومی پرچم لہرانے کا ریکارڈ قائم کیا ہے۔ اس امر کی تصدیق گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کی ٹیم نے بھی کر دی ہے،اس سے پہلے اپنے قومی پرچم کو مل کر اونچا اڑانے کا عالمی ریکارڈ ارجنٹینا میں قائم کیا گیا تھا۔

پاکستان میں نوجوانوں کو تعلیمی اداروں سے باہر متحرک اور منظم کرنے کی کوشش پاکستان کے آبادی کے اعتبار سے سب سے بڑے صوبہ پنجاب میں کی جا رہی ہے۔ جہاں ملک کی سب سے بڑی سیاسی پارلیمانی جماعت مسلم لیگ نواز کو تعلیمی اداروں میں جماعت اسلامی کے نظریاتی حلیف نوجوانوں اور سماجی و سیاسی میدان میں پاکستان تحریک انصاف کے متحرک حامی نوجوانوں کے چیلنج کا سامنا درپیش ہے۔

صوبائی حکومت نے نوجوانوں کو اپنی طرف مائل کرنے کیلیے ہمہ جہتی کوششیں شروع کر رکھی ہیں۔ اسی سلسلے میں اربوں روپوں کی خطیر رقم سے شروع کی گئی قرضہ سکیم کا بھی دوروز قبل اسی شہر مں باضابطہ وزیر اعظم میاں نواز شریف نے آغاز کیا ہے۔ اس قرضہ سکیم کی سربراہی وزیر اعظم پاکستان کی صاحبزادی مریم نواز کے سپرد ہے۔

ہاکی سٹڈیم کے وسیع میدان میں آج ہفتے کے شام سخت سکیورٹی انتظامات میں ایک نوجوانوں کو ساتھ ملا کر عالمی ریکارڈ قائم کرنے کی کوشش کی گئی ۔ اس کوشش میں ارجنٹینا کے انچاس ہزار آٹھ سوپچاس افراد کے مقابلے میں پاکستان کے ساٹھ ہزار نوجوانوں نے پنجاب یوتھ فیسٹیول کے حوالے سے حصہ لیا ہے۔ واضح رہے اس ساری سرگرمی کی نگرانی وزیر اعلی پنجاب کے صاحبزادے حمزہ شہباز شریف کر رہے ہیں۔

ملکر پرچم لہرانے کی تقریب کے موقع پر ہاکی سٹیڈیم چھو لیا آسمان کے ترانوں سے گونجتا رہا جبکہ اس رنگا رنگ اور خوشنما آتش بازی کا بھی اہتمام کیا گیا ۔ پرچم لہرانے کی تاریخی سرگرمی کے بعد گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے ماہرین کی ٹیم نے پرچم لہرانے والے نوجوانوں کی گنتی کی۔

اس کے بعد باضابطہ طور پر عالمی ریکارڈ قائم ہونے کا اعلان کیا اور گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کا ریکارڈ پاکستان کے نام کر دیا۔ اس موقع پر وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف بھی بطور خاص موجود تھے جنہوں نے نوجوانوں میں لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کی روایت شروع کی ہے۔

واضح رہے صرف چند دنوں میں پاکستان کیطرف سے یہ 29 واں ریکارڈ قائم کیا گیا ہے۔ جبکہ ملکر قومی ترانہ پڑھنے کی ایسی ہی ایک سرگرمی کی تیاری جاری ہے۔ اس مقصد کیلیے پنجاب یونیورسٹی کا انتخاب کیا گیا ہے۔ تاہم انتظامات پر حکام کے عدم اطمینان کی وجہ سے قومی ترانے کے حوالے سے ریکارڈ قائم کرنے کی سرگرمی ابھی ہونا باقی ہے۔