.

جمہوریت کا استحکام مضبوط دفاع کی بنیاد ہے: نواز شریف

پاس آوٹ ہونے والے سات کیڈٹس کا تعلق بحرین اور فلسطین سے ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان وزیر اعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ کہ جمہوریت کو مستحکم اور دہشت گردی کو ختم کیے بغیر ملک کا دفاع مؤثر نہیں بنایا جا سکتا۔ پاکستانی قوم ہر وقت مسلح افواج کے ساتھ کھڑے ہے۔

کاکول میں ملٹری اکیڈمی میں 129 ویں لانگ کورس کی پاسنگ آوٹ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ پاک فوج کے جوانوں اور افسروں کا پیشہ ان کی وفاداری اور قربانیوں کا تقاضا کرتا ہے اور تمام امتحانوں اور آزمائشوں میں یہ مت بھولنا کہ قوم آپ پر بھرپور اعتماد رکھتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اکیڈیمی ملنے والی تربیت نئے افسران کو چیلنجوں سے کامیابی سےنمٹنے کے قابل بنا دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دفاع کو ناقابلِ تسخیر بنانے کے لیے حکومت افواج کو تمام وسائل مہیا کرے گی۔ نواز شریف نے کہا کہ فنی ایجادات آج کی اہم ترین ضرورت ہیں اور فوج کو جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

مقامی میڈیا پر براہ راست دکھائے جانے والی تقریب سے خطاب میں وزیرِاعظم نے کہا کہ قومی مقاصد کے حصول کے لیے مل کر کام کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ قومی مقاصد حاصل کرنے کے لیے قوم فوج کی مدد کرنے کے لیے تیار ہے۔

اس سے پہلے کاکول پہنچنے پر بری فوج کے سربراہ راحیل شریف نے وزیرِ اعظم میاں نواز شریف کا استقبال کیا۔اس تقریب میں ملک کے وزیر دفاع خواجہ آصف اور وزیراطلاعات پرویز رشید نے بھی تقریب میں شرکت کی۔

پاس آئوٹ ہونے والے 7 کیڈٹس کا تعلق فلسطین اور بحرین سے تھا۔ لانگ کورس میں شامل فلسطینی کیڈٹس سینئر انڈر آفیسر اسلام کو صدارتی میڈل کے اعزاز سے نوازا گیا جبکہ شمشیر اعزاز کمپنی سینئر انڈر آفیسر معظم کو عطا کی گئی۔ تقریب بارش کے دوران جاری رہی، موسم کی خرابی کا پریڈ میں شامل چاک چوبند کیڈٹس کے ٹرن آوٹ پر کوئی اثر نہیں پڑا۔

وزیرِاعظم کی طرف سے کاکول کا دورہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب حکومت اور فوج کے درمیان تناؤ کا تاثر ملتا ہے۔

کئی روز قبل وفاقی وزرا اور پھر فوج کی جانب سے ایسے بیانات سامنے آئے تھے جس سے یہ تاثر پیدا ہو گیا تھا کہ سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے خلاف غداری کے مقدمے میں موجودہ حکومت اور فوج کے درمیان تعلقات سرد مہری کا شکار ہو رہے ہیں۔