.

امام کعبہ کو پولیو مہم میں شامل کرنے کا فیصلہ

پولیو پھیلاؤ کی وجہ سے پاکستان پر سفری پابندیوں کی تجویز پیش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی ادارۂ صحت کی جانب سے پولیو کے پھیلاؤ کی وجہ سے پاکستانیوں پر سفری پابندیوں کی تجویز کے بعد پاکستانی حکام نے ملک میں ایک خصوصی مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں امام کعبہ عبد الرحمن السديس بھی شریک ہوں گے۔

پاکستان دنیا کے ان تین ممالک میں شامل ہے جس کے شہریوں پر بیرونِ ملک سفر سے قبل پولیو سے بچاؤ کے قطرے پینے کی پابندی عائد کرنے کی تجویز سامنے آئی ہے۔

وزیر مملکت برائے صحت سائرہ تارڑ نے منگل کو ایوان زیریں [قومی اسمبلی] کو بتایا کہ عالمی ادارۂ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے پاکستانی شہریوں پر لازم کر دیا ہے کہ وہ بیرونِ ملک سفر سے پہلے انسداد پولیو کی ویکسین پییں اور ان مسافروں کے پاس ویکسین پلائے جانے کا سرٹیفیکیٹ بھی ہونا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستانی پولیو فری سرٹیفکیٹ کے بغیر کسی ملک کا سفر نہیں کر سکیں گے جو کہ قابل تشویش اقدام ہے۔

سائرہ تارڑ نے کہا کہ اس سے قبل ہندوستان بھی اس طرح کی پابندیوں کا سامنا کر چکا ہے۔ انھوں نے ایوان کو آگاہ کیا کہ پاکستان کے پانچ ایئر پورٹوں سے روزانہ تقریباً 12 ہزار افراد بیرون ملک سفر کرتے ہیں۔

وزیرِ مملکت نے قومی اسمبلی کو بتایا کہ اگلے ماہ ملک سے پولیو کے خاتمے کے لیے ایک خصوصی مہم شروع کی جا رہی ہے جس میں امام کعبہ بھی شرکت کریں گے۔ ان کے مطابق آئندہ ماہ امام کعبہ پاکستان کا دورہ کر رہے ہیں اور اس دورے کے دوران وہ پولیو مہم میں خصوصی طور پر حصہ لیں گے۔

انھوں نے کہا کہ پولیو کے پھیلاؤ میں مذہب کا عنصر رکاوٹ نہیں بلکہ متاثرہ علاقوں امن و امان کی خراب صورتحال کے باعث پانچ سال سے کم عمر کے بچوں تک پولیو ٹیموں کی عدم رسائی ہے۔ وفاقی وزیر کے مطابق 2014 کے دوران پولیو کے کیسوں میں مجموعی طور پر کمی آئی ہے لیکن اس پر مکمل طور قابونہیں پایا جا سکا۔