جیو نیٹ ورک کے تین چینلوں کے لائسنس منسوخ، دفاتر سیل

جیو نیٹ ورک کے خلاف دائر وزارتِ دفاع کی درخواست پر پیمرا کی کمیٹی کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری (پیمرا) نے جیو ٹی وی نیٹ ورک کے تین ٹیلی ویژن چینلوں کے لائسنس عارضی طور پر منسوخ کردیے ہیں اور اس کے دفاتر سیل کرنے کا حکم دیا ہے۔

یہ فیصلہ پیمرا کی قائم کردہ تین رکنی کمیٹی نے وزارتِ دفاع کی جانب سے جیو ٹی وی نیٹ ورک کے خلاف دائر کردہ درخواست کا جائزہ لینے کے بعد کیا ہے۔کمیٹی سید اسماعیل شاہ، پرویز راٹھور اوراسرارعباسی پر مشتمل تھی۔

وزارت دفاع نے یہ درخواست جیو نیوز پر پاکستان کے طاقتور سراغرساں ادارے انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) اور اس کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل ظہیر الاسلام کے خلاف 19 اپریل کی نشریات میں عاید کردہ الزامات کے ردعمل میں دائر کی تھی اور اس میں جیو نیٹ ورک کا لائسنس منسوخ کرنے کا کہا تھا۔

کمیٹی کے ارکان نے منگل کو اسلام آباد میں اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ انھوں نے جیو نیٹ ورک کے تین چینلوں جیو نیوز ،جیو انٹرٹینمنٹ اور جیو تیز کے لائسنس فوری طور پر منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پیمرا کی کمیٹی کے فیصلے کے مطابق جیو نیٹ ورک کے ان تینوں چینلوں کے لائسنس 28 مئی تک منسوخ رہیں گے۔اس کے بعد کمیٹی کا ایک اور اجلاس ہوگا جس میں اس کے لائسنس مستقل طور پر منسوخ کرنے کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا اور اس اجلاس میں حکومت کے نمائندے بھی شریک ہوں گے۔

کمیٹی کے ایک رکن شمس الرحمان نے مزید بتایا کہ انھوں نے جیو نیوز کا لائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ اتفاق رائے سے کیا ہے لیکن قانونی تقاضے پورے کرنے کے لیے اپنی سفارشات شکایات کونسل کو بھیجی ہیں اور اس سے کہا ہے کہ وہ 28 مئی کو آیندہ اجلاس سے قبل اپنا جواب دے۔کمیٹی کے رکن اسرار عباسی کا کہنا تھا کہ آج کے اجلاس میں پیمرا کے کل بارہ میں سے ایک تہائی ارکان شریک تھے لیکن حکومتی ممبر نے شرکت نہیں کی اور توقع ہے کہ وہ آیندہ اجلاس میں شرکت کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں