.

پاکستان کرکٹ بورڈ سربراہی، ذکاء اشرف پھر آوٹ، سیٹھی بحال

سپریم کورٹ نے منتخب بورڈ چئیرمین کی بحالی کا فیصلہ معطل کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان میں عوامی سطح پر مقبول ترین کھیل ، کرکٹ کے انتظامی ادارے پاکستان کرکٹ بورڈ کے سربراہ کو سپریم کورٹ نے پھر تبدیل کر دیا ہے۔ اسی ہفتے کے دوران اسلام آباد ہائِی کورٹ نے معروف ٹی وی اینکر نجم سیٹھی کو کرکٹ بورڈ کی سربراہی سے ہٹا کر بورڈ کے منتخب سربراہ چوہدری ذکاء اشرف کو ان کے منصب پر بحال کر دیا تھا۔ لیکن سپریم کورٹ نے آج بدھ کے روز ہائی کورٹ کا یہ فیصلہ معطل کرتے ہوئے نجم سیٹھی کو ایک مرتبہ پھر چئیر مین بورڈ مقرر کر دیا ہے۔

سپریم کورٹ نے یہ فیصلہ وفاقی حکومت کی طرف سے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو چیلنج کرنے کی بنیاد پر دیا ہے ۔ جبکہ فریقین کو جسٹس ظہیر انور جمالی کی سربراہی میں قائم تین رکنی بینچ نے 27 مئِ کو طلب کر لیا ہے، تاکہ فریقین اپنا موقف پیش کر سکیں۔ سپریم کورٹ میں اس دلچسپ نوعیت اختیار کر جانے والے مقدمے میں عاصمہ جہانگیر حکومتی وکیل کے طور پر پیش ہوئیں۔

اس سے پہلے پاکستان کرکٹ بورڈ کے منتخب مگر معزول کیے گئے چئیرمین چوہدری ذکا اشرف نے اپنی برطرفی کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کی تھی ۔ جس پر جسٹس نورالحق قریشی نے ان کی درخواست منظور کرتے ہوئے انہیں بطور منتخب سربراہ بحال اور نجم سیٹھی کو برخاست کر دیا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی سربراہی کا عملا میوزیکل چئیر میں تبدیل ہو کر رہ جانے سے پورے ملک کے علاوہ عالمی سطح پر کرکٹ سے متعلق حلقوں میں موضوع بحث بنا ہوا ہے۔ کرکٹ شائقین کے مطابق کرکٹ کے میدان سے زیادہ کرکٹ بورڈ کے ذمہ داران نے بورڈ میں کرسی کے اس کھیل میں مشغول ہوگئے ہیں اور کھلاڑیوں کی سطح کی سیاست اب بورڈ سربراہان کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔

کرکٹ کا ہما حتمی طور پر کس کے سر پر بیٹھے گا اس کا فیصلہ وفاقی حکومت کی دائر کردہ اپیل کی بنیاد پر سپریم کورٹ میں آئندہ دنوں میں ہو گا۔ اگرچہ ذکائ اشرف باجوہ آج ایک مرتبہ پھر کرکٹ بورڈ سے آوٹ ہو گئے ہیں۔