.

اسلام آباد: خود کش حملہ دو فوجی افسروں سمیت 5 شہید

حساس ادارے کی گاڑی تباہ، کارروائی ترنول کے قریب کی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کو پشاور سے ملانے والی شاہراہ پر واقع قصبے ترنول اور فتح جنگ کے درمیان خود کش دھماکہ کے نتیجے میں دو فوجی افسروں سمیت پانچ افراد شہید ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب افسران معمول کے مطابق اپنے دفاتر کی طرف جارہے تھے۔ معلوم ہوا کہ مبینہ خود کش حملہ آور ایک بھکاری کے روپ میں تھا جس نے حساس ادارے کے افسروں کی گاڑی کو ان کے معمول کے راستے پر نشانہ بنایا ۔

اس خود کش حملے میں اٹامک انرجی کمیشن کی گاڑی کو ہدف بنایا گیا۔ گاڑی پر سوار دو افسران لیفٹیننٹ کرنل ظاہر شاہ اور لیفٹیننٹ کرنل ارشد شہید ہو گئے ہیں۔ خود کش دھماکے کی زد میں آنے والے تین عام شہری بھی شہید ہوگئے ہیں، جن میں ایک قریب سے گذرنے والا رکشہ ڈرائیور بتایا گیا ہے۔

پولیس حکام نے اس واقعے کو خود کش قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ جوہری تحقیقات کے ادارے آٹامک انرجی کمیشن کی گاڑی کو خود کش حملہ آور نے ہٹ کیا ہے۔

فوجی حکام کے مطابق حساس ادارے کی ڈبل کیبن گاڑی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ تاہم ابھی تفصیلات کا انتظار ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ خود کش حملے کے وقت گاڑی کے ساتھ سکیورٹی کا عملہ موجود نہ تھا۔