پاکستان: وفاقی کابینہ میں توسیع اور تبدیلی کا اصولی فیصلہ

اضافے سے سینیٹ، جنوبی اور وسطی پنجاب کی نمائندگی بہتر ہوگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف نے سیاسی چیلنجوں کا توڑ کرنے کے لیے وفاقی کابینہ میں بعض تبدیلیوں کے ساتھ ساتھ وزراء کی تعداد میں اضافے پر اصولی اتفاق کر لیا ہے۔ اس تبدیلیوں کا زیادہ امکان وزارت دفاع اور جہاز رانی اور بندر گاہوں سے متعلق وزارت میں ہے۔ اس فیصلے پر عمل درآمد رمضان المبارک کے دوران ہی ممکن بنائے جانے کی تجویز ہے۔ اس امر کا بھی امکان ہے کہ نئے وزراء اگلے ہفتے عشرے میں حلف اٹھا لیں۔

تفصیلات کے مطابق ملک میں سیاسی اعتبار سے جاری صورت حالات اور اپنی ٹیم کی ایک سالہ کارکردگی کا جائزہ لینے کے بعد وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے اپنے قریبی رفقاء سے مشورے کے نتیجے میں کابینہ میں کچھ تبدیلیوں اور اضافے کا اصولی فیصلہ کیا ہے۔ اس پس منظر میں ایک آدھ وزیر کی سبکدوشی یا کم ازکم ان کے دائرہ عمل کو محدود کرنے کا بھی فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ بتایا گیا یہ فیصلہ کرپشن کہانیوں، الزامات اور باہمی اختلافات کی حالیہ خبروں کی روشنی میں کیا جا رہا ہے۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق کابینہ میں نئے ارکان میں اضافہ کے لیے سینیٹ بھی بعض نام سنجیدگی سے زیر غور ہیں خصوصا میڈیا فرینڈلی ناموں کو ترجیح دی جا رہی ہے۔ جبکہ پنجاب کی سرائیکی پٹی اور وسطی پنجاب سے بھی وزراء لیے جانے کی تیاری ہے۔

حکومتی ذرائع کے مطابق پارٹی کے حلقوں کی خواہش کے احترام کے طور پر مختلف وزارتوں کے لیے پارلیمانی سیکرٹریوں کے تقرر کی تجویز پر مثبت فیصلے کی امید ہے تاکہ سیاسی میدان میں موجود چیلنج کا موثر جواب دینے کےلیے موثر ٹیم دستیاب رہے۔ نیز بعض خواتین ارکان پارلیمنٹ کو بھی اہم ذمہ داریاں دیے جانے کی سفارش سامنے آئی ہے۔

ذرائع کے مطابق میاں نواز شریف جو ایک سال مسلسل حکومتی امور میں انتہائی مصروف رہے ہیں اب پارٹی کی مشاورت کو باقاعدہ بنانے کے خواہش مند ہیں تاکہ سیاسی چیلنجوں کا جواب سیاسی سطح پر گلی محلے کی بنیاد پر بھی دیا جاسکے اور پارٹی کو ایک مرتبہ پھر متحرک کیا جائے۔ اس مقصد کے لیے عوام کی حکومت اور ذمہ داران حکومت تک رسائی آسان بنانے کے لیے جھنڈے والی گاڑیوں میں اضافہ زیادہ بھی لیٹ ہوا تو عید الفطر تک ممکن کر لیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں