نواز شریف سے جنرل راحیل شریف کی ملاقات

شاہراہ دستور پر30 ہزار اہلکاروں کو تعینات کر دیا گیا، اہم عمارتیں خالی کرا لی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وزیر اعظم پاکستان نواز شریف سے آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی ملاقات ہوئی ہے، ملاقات میں موجودہ سیاسی بحران پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف سے آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے ملاقات ہوئی ہے، ملاقات میں ملکی مفاد کے لیے سیاسی بحران کا جلد حل نکالنے اور فریقین سے دوبارہ مذاکرات کا عمل شروع کرنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

ریڈ زون میں گذشتہ چودہ دنوں سے احتجاجی دھرنا دینے والے پاکستان عوامی تحریک اور تحریک انصاف کی ڈیڈ لائن ختم ہوتی ہی پورے علاقے میں پولیس کی بھاری نفری کو تعینات کردیا گیا ہے، جب کہ کابینہ ڈویژن سے شاہراہ دستور تک گاڑیوں کاداخلہ بند کر دیا گیا۔

ذرائع کے مطابق ریڈ زون میں واقع تمام اہم عمارتوں کو خالی کرانے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے۔ ریڈ زون میں اچانک سنسنی خیزی اس وقت دیکھنے میں آئی جب 30 ہزار کا پولیس لشکر اچانک ریڈ زون پہنچا دیا گیا اور پولیس کی بھاری نفری دھرنوں کے اطراف تعینات کر دی گئی۔

ریڈ زون میں تعینات تمام اہل کاروں نے اپنی اپنی پوزیشنز سنبھال لی ہیں، جب کہ حساس اور اہم عمارتوں کی چھتوں پر بھی اہل کاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔

انقلاب مارچ میں شریک پی اے ٹی کے کارکنان کی جانب سے اجتماعی اذانیں دی گئیں جب کہ دوسری جانب پشاور سے آنے والی جی ٹی روڈ کو کنٹینر لگا کر بند کر دیا گیا ہے، انتطامیہ اور پولیس کی جانب سے جی ٹی روڈ کو ٹیکسلا کے قریب مارگلہ کے مقام پر بند کیا گیا ہے۔

ادھر کسی بھی ناخوشگوار واقعہ اور حالات سے نمٹنے کیلئے انتطامیہ نے اسلام آباد کے پولی کلینک اور پمز اسپتال میں ریڈالرٹ جاری کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں