پولیس اور بلوائیوں کا اسلام آباد میں میڈیا پر تشدد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسلام آباد کے ریڈ زون میں واقع پاک سیکریٹریٹ میں پولیس کی جانب متعدد نجی ٹی وی چینلز سے منسلک ٹیموں کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے جبکہ ریڈ زون کے قریب ہی واقع جیو نیوز چینل کے اسلام آباد دفتر کا ڈنڈوں اور غلیلوں سے لیس بلوائیوں نے محاصرہ کر لیا۔

اس کے علاوہ گزشتہ رات پاکستان تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے کارکنوں اور پولیس کے درمیان شروع ہونے والی جھڑپوں کا سلسلہ اتوار کی صبح بھی جاری ہے اور لاٹھیوں سے لیس پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک کے کارکنان آگے بڑھنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

سیکیورٹی فورسز کیا جانب مظاہرین کو روکنے کے لیے شدید شیلنگ کی جا رہی ہے۔

ادھر وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ میڈیا پر تشدد کرنے والے اہل کاروں کو سزا دی جائے گی۔ پولیس نے حکومت کو شرمندہ کرایا ہے، سانحہ ماڈل ٹاؤن میں بھی یہ ہی ذہنیت تھی۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق کہا کہ وہ وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو اس معاملے کی شکایت کریں گے۔ پولیس اہلکاروں کا جو ذمے دار افسر ہو گا اس کے خلاف کارروائی ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ اپنی ذمے داریوں سے تجاوز کر کے یہاں آیا ہوں۔ ٹی وی پر جو کچھ دیکھا وہ یہاں آ کر خود دیکھ رہا ہوں، جب ذمے دار افسر نہیں ہو گا تو پولیس غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرے گی۔

دوسری جانب ایم کیو ایم کی کال پر آج کراچی سمیت سندھ میں یومِ سوگ منایا جا رہا ہے،جبکہ تحریک انصاف نے بھی اتوار کو ملک گیر مظاہروں کا اعلان کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں