.

"وزیر اعظم کو جنرل راحیل نے مستعفی ہونے کا نہیں کہا"

فوج اور حکومتی ترجمان نے الگ الگ بیان میں تردید کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حکومت اور فوج کے ترجمان نے اپنے الگ الگ بیانات میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی جانب سے وزیر اعظم نواز شریف کو استعفیٰ کا مشورہ دینے کی خبروں کی سختی سے تردید کی ہے۔

پاک فوج شعبہ تعلقات عامہ 'آئی ایس پی آر' کے سربراہ میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں ان خبروں کی سختی سے تردید کی گئی ہے کہ آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے وزیر اعظم نواز شریف کو استعفیٰ یا چھٹی پر جانے کا مشورہ دیا ہے۔

ایک ٹویٹر پیغام میں عاصم باجوہ نے وزیر اعظم کے استعفیٰ یا چھٹی پر جانے کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ دوسری جانب حکومتی ترجمان کی جانب سے بھی استعفی کے مشورے کی خبر کی تردید کر دی گئی ہے۔

ادھر حکومتی ترجمان نے میڈیا کو بتایا کہ آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کی جس میں سیاسی کشیدگی حل کرنے سے متعلق لائحہ عمل پر چیت ہوئی۔

یاد رہے کہ ہجنرل راحیل شریف نے پیر کی صبح وزیر اعظم ہاؤس میں نواز شریف سے ملاقات کی۔ آرمی چیف نے وزیر اعظم کو گزشتہ روز ہونے والی کور کمانڈرز کانفرنس کے فیصلوں سے آگاہ کیا۔

ذرائع کے مطابق آرمی چیف اور وزیر اعظم کے درمیان ڈھائی گھنٹے جاری رہنے والی ملاقات میں سیاسی کشیدگی حل کرنے سے متعلق لائحہ عمل پر بھی بات چیت ہوئی۔