.

پاک فوج کی بمباری ،طالبان کمانڈر سمیت 30 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں پاک فوج کے فضائی حملوں میں طالبان کے ایک کمانڈر سمیت تیس جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں اور ان کے چار ٹھکانوں کو تباہ کردیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق پاک فوج نے شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن ضرب عضب کے دوران تحصیل دتہ خیل میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے چار ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔فضائی حملے میں مرنے والے طالبان کمانڈر کا نام داؤد مٹہ بتایا گیا ہے۔

تاہم فوری طور پر لڑاکا طیاروں کی بمباری میں ہلاک ہونے والے باقی طالبان جنگجوؤں کی شناخت معلوم نہیں ہوسکی ہے۔دم تحریر پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ( آئی ایس پی آر) کی جانب سے طالبان جنگجوؤں کے خلاف منگل کو کارروائیوں کی تفصیل سے متعلق کوئی بیان بھی جاری نہیں کیا گیا تھا۔

شمالی وزیرستان میں پاکستان آرمی ٹی ٹی پی اور دوسرے جنگجو گروپوں کے خلاف 15 جون سے ضربِ عضب کے نام سے بڑی کارروائی کررہی ہے۔اس آپریشن کے ساتھ ساتھ امریکی سی آئی اے نے اپنے بغیر پائیلٹ جاسوس طیاروں کے ذریعے طالبان جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر میزائل حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔

پاک فوج نے دہشت گردوں کی نقل وحرکت کو محدود کرنے کے لیے شمالی وزیرستان کی مکمل ناکا بندی کررکھی ہے اور کسی کو بھی اس کی اجازت کے بغیر کھلے عام نقل وحرکت کی اجازت نہیں ہے۔آپریشن ضربِ عضب میں اب تک بیسیوں غیرملکیوں سمیت ایک ہزار سے زیادہ مشتبہ جنگجو مارے جاچکے ہیں۔